انٹرنیشنل ورلڈ الیون کا شاندار استقبال‘ پہلا مقابلہ کل ہو گا : سیکورٹی کے سخت انتظامات

انٹرنیشنل ورلڈ الیون کا شاندار استقبال‘ پہلا مقابلہ کل ہو گا : سیکورٹی کے سخت انتظامات

کراچی (نیوز ایجنسیاں+نوائے وقت رپورٹ) ملک میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی کے لئے ساڑھے تین سال سے جاری کوششیں رنگ لے آئیں، نمائشی میچ کھیلنے انٹرنےشنل ورلڈ الیون کراچی پہنچ گئی۔ کھلاڑی رات گئے کراچی کے جناح انٹرنیشنل ائیر پورٹ پہنچے جہاں کھلاڑیوں کا صوبائی وزیر کھیل ڈاکٹر محمد علی شاہ نے پرتپاک استقبال کیا اور پھولوں کے ہار پہنائے۔ ورلڈ الیون کے کھلاڑیوں نے کہا کہ پاکستان میں کرکٹ کی بحالی میں کردار ادا کرنے آئے ہیں۔ سیکیورٹی کے حوالے سے کسی بھی قسم کی کوئی شکایت نہیں۔ صوبائی وزیر ڈاکٹر محمد علی شاہ نے کہا کہ ورلڈ الیون کے کھلاڑیوں کا پاکستان آنا خوش آئند ہے اور اگلے چار دن پاکستان اور کرکٹ کی بحالی کیلئے بہت اہم ہیں۔جنوبی افریقہ کے پانچ کھلاڑیوں میں آندرے نیل، نینٹی ہیورڈ، لوٹس باسمین اور ٹی ٹشابابا امل ہیں جبکہ ویسٹ انڈیز کے چار کھلاڑیوں میں ریکاڈو پاول، سٹین ٹیلر، جرمین لاسن اور ایڈم سینفرڈ شامل ہیں۔ جنوبی افریقہ کے کھلاڑیوں نے کراچی میں میچ کے انعقاد کو خوش آئند قرار دیا اور مستقبل میں بھی پاکستان میں کرکٹ میچز کھیلنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔ پہلا میچ کل جبکہ دوسرا پر سوں کھیلا جائیگا۔ تین نومبر 2009 کو لاہور میں سری لنکن ٹیم پر ہونے والے حملے کے بعد پہلی مر تبہ بین الاقومی کھلاڑی پاکستان آ رہے ہیں۔ انٹرنیشنل الیون کے کپتان جے سوریا نے کہا ہے کہ خواہش ہے کہ پاکستان میں جلد انٹرنیشنل کرکٹ بحال ہو۔ کوچ کالی چرن نے کہا کہ پاکستان آ کر پاکستان کیخلاف کھیلنے میں مزہ آئے گا۔ یہ پیغام دینا ہو گا کہ پاکستان محفوظ جگہ ہے۔ 1972ءکے بعدپاکستان آ یا ہوں۔ غیرملکی کھلاڑیوں کیلئے سخت سکیورٹی انتظامات کئے گئے ہیں۔ ہوٹل کے باہر سول لباس میں اہلکاروں سمیت دو بکتربند گاڑیاں بھی کھڑی کردی گئی۔ ہوٹل کے باہر کی سکیورٹی کی ذمہ داری سول لائنز تھانے کو جبکہ اندر کی سکیورٹی کی ذمہ داریاں مختلف تھانوں کو دی گئی ہیں۔ ہوٹل کے باہر سکیورٹی پر ڈی ایس پی اپنے 45اہلکاروں کے ساتھ موجود ہے دو بکتر بند گاڑیاں بھی ہوٹل کے باہر لگا دی گئی ہیں۔ ہوٹل کے اندر سول لباس میں بھی اہلکاروں کو تعینات کیا گیا جبکہ ہوٹل کی چھتوں پر بھی اہلکار ہیں نہ صرف ہوٹل بلکہ کرکٹر پریکٹس کے لئے جائیں گے یا میچ کے لئے تو مخصوص شاہراہوں کو ٹریفک کے لئے بند کیا جائے گا اور راستے میں کھڑی تمام مشکوک گاڑیوں اور موٹرسائیکلوں کو بھی ہٹا دیا جائے گا۔