ورلڈالیون 3 سال تک پاکستان کا دورہ کرے گی : نجم سیٹھی

ورلڈالیون 3 سال تک پاکستان کا دورہ کرے گی : نجم سیٹھی

لاہور(سپورٹس رپورٹر+نمائندہ سپورٹس) پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین نجم سیٹھی نے کہا ہے کہ بھارت کے ساتھ آخری مذاکرات آئی سی سی صدر ششانک منوہر کی موجود میں کر لیے ہیں اب قانونی چارہ جوئی کے لیے بین الاقوامی لاءفرم کی خدمات حاصل کی جائیں گی تاکہ آئی سی سی ڈسپوٹ کمیٹی میں معاملہ کو اٹھایا جا سکے۔ پاکستان اور ورلڈ الیون کے درمیان آزادی کپ سیریز کے لیے سخت سکیورٹی ہونے کی وجہ سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا رہا ہے جبکہ ٹکٹوں کی قمیتوں پر بھی مستقبل میں نظرثانی کی جائے گی۔ ورلڈ الیون تین سال تک پاکستان کا دورہ کریگی ۔ یہ بات انہوں نے آئی سی سی چیف ایگزیکٹو ڈیوڈ رچرڈ کے ساتھ قذافی سٹیڈیم میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی۔ ان کا کہنا تھا کہ لاہور کے بعد کراچی اور دیگر شہروں میں بھی بین الاقوامی کرکٹ کی بحالی چاہتے ہیں اس کے لیے ہمیں آئی سی سی اور اسکے رکن ممالک کا اعتماد حاصل کرنا ہے۔ نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ ورلڈ الیون کا دورہ بارش کا پہلاقطر ہ ہے۔ لوگوں کو صبر کرنا چاہئے جلد ہی پاکستان کے تمام بڑے شہروں میں انٹرنیشنل کرکٹ بحال ہو جائے گی۔ ڈی جی آئی پی آر نے فاٹا میں انٹرنیشنل لیول کا ٹورنامنٹ منعقد کروانے کا کہا ہے جلد ہی ڈومیسٹک سے ابتدا کریں گے اور حالات کی بہتری کے ساتھ پشاور، کراچی، فیصل آباد، ملتان سمیت تمام شہروں میں کرکٹ بحال ہو جائے گی۔ کراچی کے سٹیڈیم کی تزین آرائش پر ڈیڑھ ارب روپے لگنے ہیں۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کی مالی صورتحال اس قابل ہے کہ پی سی بی پہلے اتنے بڑے کام کر سکے۔ ہمیں پہلے انٹرنیشنل کرکٹ پاکستان میں لانی ہے تاکہ ہم کچھ پیسے اکٹھے کرسکیں پھر ہم اکیڈمیز کو فعال کریں گے۔ کے پی کے گورنمنٹ کے ساتھ ایم او یو سائن کرنے جا رہے ہیں جہاں مقامی حکومت کی مالی معاونت سے جلد ہی انٹرنیشنل لیول کی اکیڈمی اپنا کام شروع کردے گی۔ ورلڈ الیون یا کسی دیگر ٹیم کے ساتھ فوری طورپر ٹیسٹ میچ یہاں کھیلنا ممکن نہیں ہے۔ کرکٹ اکیڈمی کیلئے خیبر پی کے حکومت سے ایم او یو سائن کرینگے ‘حاالات ٹھیک رہے تو آئندہ سال دو بڑی ٹیمیں پاکستان کا دورہ کریں گی ۔پاکستان سے نہ کھیلنے والے اپنی کرکٹ اور عوام کا نقصان کر رہے ہیں ‘سیریز کیلئے بھارت سے مذاکرات نہیں کرینگے ‘آئی سی سی کردار ادا کرے ۔انہوں نے کہا کہ جو لوگ پاکستان کے ساتھ سیاست کرتے ہیں اس میں ان کا ہی نقصان ہے۔ بھارت کے ساتھ مصالحتی کمیٹی والا معاملہ آخری مراحل میں ہے، ہم ٹربیونل کیلئے اپنا نمائندہ نامزد کر چکے ہیں دیگر دو مقرر ہوتے ساتھ ہی یہ معاملہ وہاں چلا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ ڈومیسٹک کرکٹ میں انٹرنیشنل کرکٹ کی شمولیت اچھا آئیڈیا ہے متعلقہ فورم پر بات کروں گا۔