نیوزی لینڈ نے تیسرے ون ڈے میں پاکستان کو 183رنزسے شکست دےدی

خبریں ماخذ  |  ویب ڈیسک
نیوزی لینڈ نے تیسرے ون ڈے میں پاکستان کو 183رنزسے شکست دےدی

تیسرے ون ڈے میچ میں نیوزی لینڈ نے پاکستان کو183رنز سے ہرا کر سیریز اپنے نام کرلی ۔کیویز کو پانچ میچز کی سیریز میں تین صفر کی برتری حاصل ہوگئی ہے۔ قومی ٹیم257رنز کے تعاقب میں74رنز پر ڈھیر ہوگئی۔قومی ٹیم کے 7 بیٹسمین ڈبل فیگر میںداخل نہ ہو سکے،فاسٹ بالر رومان رئیس 16 رنزسے نمایاں بیٹسمین رہے ۔نیوزی لینڈ کیلئے بولٹ نے 5جبکہ منرو اور ساتھی نے دو ، دو وکٹیں لیں، ٹرینٹ بولٹ میچ کے بہترین کھلاڑی قرار پائے۔گزشتہ روزڈیونیڈن کے یونیورسٹی اوول گراﺅنڈ میںکھیلے گئے سیریز کے تیسرے ون ڈے میچ میںنیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیمسن نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا لیکن 15 کے اسکور پر کولن منرو فہیم اشرف کی وکٹ بن گئے تاہم اس کے بعد مارٹن گپٹل اور ولیمسن نے دوسری وکٹ کیلئے 69رنز جوڑ کر پاکستان کیلئے مشکلات کھڑی کرنے کی کوشش کی لیکن ایک غیرضروری رن لینے کی کوشش میں گپٹل کی اننگز اختتام پذیر ہوئی۔کین ولیمسن نے دوسرے اینڈ سے عمدہ بیٹنگ کا سلسلہ جاری رکھا اور تجربہ کار روس ٹیلر کے ساتھ مل کر تیسری وکٹ کیلئے 74رنز جوڑ کر اسکور کو 158تک پہنچا دیا، وہ 73رنز بنانے کے بعد پویلین لوٹے۔ولیمسن کے آﺅٹ ہونے کے بعد کمان ٹیلر نے سنبھالی اور نئے بلے باز ٹام لیتھم کے ساتھ مل کر اسکور کو 209تک پہنچا دیا لیکن شاداب خان نے 52 رنز بنانے والے ٹیلر کے ساتھ ساتھ نئے بلے باز ہنری نکولس کو بھی یکے بعد دیگرے دو گیندوں پر آﺅٹ کر کے ٹیم کو دو اہم کامیابیاں دلائیں۔اس موقع پر پاکستان نے بالرز کی مدد سے میچ میں واپسی کی اور ایک بڑے مجموعے کی جانب گامزن نیوزی لینڈ کی وکٹیں حاصل کر کے پوری ٹیم کو 257 رنز پر ٹھکانے لگا دیا۔پاکستان کی جانب سے حسن علی اور رومان رئیس نے تین، تین جبکہ شاداب خان نے دو کھلاڑیوں کو آﺅٹ کیا۔258 رنز کے نسبتاً آسان نظر آنے والے ہدف کے تعاقب میں قومی ٹیم کا آغاز انتہائی مایوس کن رہا ۔قومی ٹیم آغاز سے ہی مشکلات کا شکار رہی،گرین شرٹس کی بیٹنگ لائن اس وقت لڑکھڑا گئی جب صرف 2 کے مجموعی سکور پر 3وکٹیں گر گئیں،15رنز پر آدھی ٹیم پویلین لوٹ چکی تھی۔ٹرینٹ بولٹ نے شاندار اسپیل کرتے ہوئے اوپنرز اظہر علی، فخر زمان اور محمد حفیظ کو ٹھکانے لگایا جبکہ بابر اعظم رن آٹ ہوئے۔ اظہر علی 0، فخر زمان 2 اور محمد حفیظ 0پر پویلین لوٹے،بابر اعظم 8 پرپویلین لوٹ گئے۔تجربہ کار شعیب ملک ایک مرتبہ توقعات پر پورا نہ اتر سکے اور تین رنز بنانے کے بعد لوکی فرگیوسن کو وکٹ دے بیٹھے۔گزشتہ میچ میں نصف سنچریاں بنا کر پاکستان کو خفت سے بچانے والے حسن علی اور شاداب خان بھی اس مرتبہ بے بس نظر آئے اور دونوں بالترتیب صفر اور ایک رنز بنا کر آٹ ہوئے جبکہ فہیم اشرف 10رنز کے ساتھ ڈبل فیگر میں داخل ہونے والے پہلے باز بنے۔32 رنز پر آٹھ وکٹوں سے محروم ہونے کے بعد ایسا محسوس ہوتا تھا کہ شاید پاکستان ون ڈے میں اپنے سب سے کم اسکور 43رنز بھی اسکور نہ کر سکے لیکن کپتان سرفراز احمد نے محمد عامر اور رومان رئیس کے ساتھ مل کر ٹیم کو اس خفت سے بچا لیا۔پاکستان کی ٹیم 28ویں اوور میں 74 رنز بنا کر ڈھیر ہو گئی جہاں رومان رئیس 16 رنز بنا کر سب سے کامیاب بلے باز رہے جبکہ کپتان سرفراز احمد اور محمد عامر 14، 14 رنز بنا سکے۔قومی کرکٹ ٹیم کے 7کھلاڑی ڈبل فیگر میں ہی نہ جا سکے کپتان سرفراز احمد 14رنز بنا کر ناٹ آوٹ رہے اور رومان رئیس 16رنز بنا کر ٹاپ سکورر رہے ۔نیوزی لینڈ کی جانب سے مین آف دی میچ ٹرینٹ بولٹ نے پانچ جبکہ کولن منرو اور لوکی فرگیوسن نے دو، دو وکٹیں حاصل کیں۔قومی ٹیم میں ایک تبدیلی اوپنر امام الحق کی جگہ فخر زمان کی واپسی ہوئی ہے جب کہ نیوزی لینڈ ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی تھی۔میچ میں عبرتناک شکست کے بعد گفتگو کرتے ہوئے کپتان سرفراز احمد سخت افسردہ نظر آئے، ان سے میچ میں شکست کے حوالے سے سوال کیا گیا تو انہوں نے انتہائی غمزدہ انداز میں بلے بازوں کو شکستِ فاش کا ذمہ دار قرار دیا۔ کپتان سرفراز احمد نے کہا کہ قومی ٹیم کے بلے بازوں کی پرفارمنس نے انہیں سخت مایوس کیا ہے، بالرز نے اپنے حصے کا کام کردیا لیکن بلے باز متاثر کرنے میں ناکام رہے۔سرفراز احمد نے مزید کہا کہ سیریز تو ہار ہی چکے ہیں ، اب مل کر بیٹھیں گے اور جو بھی مسائل ہوں گے انہیں حل کرکے اگلے 2 میچز میں فتح حاصل کرنے کی کوشش کریں گے۔واضح رہے کہ قومی کرکٹ ٹیم نے نیوزی لینڈ کے خلاف تیسرے ون ڈے میچ میں 183 رنز کی عبرتناک شکست کا گولڈ میڈل حاصل کرکے پانچ میچز کی سیریز تھالی میں رکھ کر 3-0 سے نیوزی لینڈ کی جھولی میں ڈال چکی ہے۔سرفراز احمد کا کہنا تھا کہہمار ے بلے بازو ں کیلئے نیا گیند بڑا مسئلہ بن رہا ہے او ر ہم پہلے 10اوورز میں بے تحاشہ وکٹیں کھو رہے ہیں ۔