فیورٹ کو شکست، ثابت ہوگیا پاکستانی ٹیم کتنی خطرناک ہو سکتی ہے: مبصرین

فیورٹ کو شکست، ثابت ہوگیا پاکستانی ٹیم کتنی خطرناک ہو سکتی ہے: مبصرین

آک لینڈ (رائٹر) ورلڈکپ کرکٹ میں فاتحانہ واپسی کے بعد پاکستان اسی مقام پر پہنچ گیا ہے جہاں وہ 1992ءمیں سیمی فائنل کے دوران نیوزی لینڈ کوہرانے کے بعد پہنچا تھا۔ موجودہ ورلڈ کپ میں پاکستان کا آغاز اچھا نہیں تھا۔ ابتدائی میچ میں بھارت سے شکست کے بعد وہ دوسرے میچ میں ویسٹ انڈیز سے بھی ہار گیا۔ مبصرین کے مطابق ایڈن پارک میں پاکستانی ٹیم نے ٹورنامنٹ سے قبل کے فیورٹ جنوبی افریقہ کو ہرا کر یہ ثابت کیا کہ وہ کس قدر خطرناک ہوسکتی ہے۔ اس میچ کی کامیابی میں سرفراز کا بھی بڑا ہاتھ ہے جس نے اوپننگ بیٹسمین اور وکٹ کیپر کا دوہرا کردار ادا کیا۔ سرفراز نے جے پی ڈومینی کے ایک اوور میں تین چھکے لگائے مگر دوسرا رن لینے کی کوشش میں 49 کے سکور پر رن آﺅٹ ہوگئے اور بدقسمتی سے نصف سنچری مکمل نہ ہوسکی۔