سپاٹ فکسنگ سکینڈل: ناصر جمشید کیس کا فیصلہ پیر کو سنایا جائے گا

لاہور (سپورٹس رپورٹر) پاکستان کرکٹ بورڈ کے انٹی کرپشن ٹریبونل کی جانب سے قومی ٹیم کے اوپنر بلے باز ناصر جمشید کیخلاف پاکستان سپرلیگ کے دوسرے ایڈیشن میں سپاٹ فکسنگ سکینڈل کیس کا فیصلہ پیر کو سنایا جائیگا۔ پی سی بی انٹی کرپشن یونٹ کی جانب سے ناصر جمشید پر دو شقوں کی خلاف ورزی کا الزام ہے۔ ناصر جمشید پر الزام ہے کہ انہوں نے سپرلیگ فکسنگ کیس کے تناظر میں پی سی بی کے عدم تعاون کیا جبکہ انٹی کرپشن کوڈ کے تحت ورلڈ کپ دوہزار پندرہ میں بطور اوپنر پاکستان کی نمائندگی کرنے والے ناصر جمشید نے معلومات بھی نہیں دیں۔ ٹریبونل میں ناصر جمشید کے مقابل براہ راست پاکستان کرکٹ بورڈ ہے اور توقع ہے کہ دو شقوں کی خلاف ورزی پر ناصر جمشید پر چھ ماہ سے ایک سال تک کی پابندی عائد کی جاسکتی ہے۔ گزشتہ روزپی ایس ایل فکسنگ کیس کی سماعت نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں ہونا تھی جس میں پی سی بی کے گواہ محمد عرفان نے اپنا بیان قلمبند کرانا تھا لیکن سماعت شاہ زیب حسن کے وکیل کاشف رجوانہ کی عدم.دستیابی پر ملتوی کر دی گئی ۔سماعت کی نئی تاریخ کا اعلان محمد عرفان کی دستیابی کو مدنظر رکھ کر کیا جائے گا۔