عدالت سے واپس جاتے ہوئے ماں بیٹی کو اغوا کر لیا گیا

خبریں ماخذ  |  ویب ڈیسک
عدالت سے واپس جاتے ہوئے ماں بیٹی کو اغوا کر لیا گیا

  ساھیوال /بورے والا :خاوند کے خلاف تنسیخ نکاح کے دعویٰ میں عدالت پیشی سے واپس جاتے ہوئے ماں بیٹی کو پرسرار طور پر اغوا،ورثاءکی جانب سے دونوں خواتین کو اغوا کے بعد قتل کا شبہ،پولیس مغوی خواتین کا سراغ نہ لگا سکی، نواحی گاﺅں427ای بی کی خاتون خدیجہ بی بی نے اپنے خاوند سے طلاق لینے کے لیے اُسکے خلاف بورے والا کی مقامی عدالت میں تنسیخ نکاح کا دعویٰ دائر کر رکھا تھا گذشتہ روز وہ اپنی والدہ شہناز بی بی کے ہمراہ اس مقدمہ کی پیشی پر عدالت سے واپس گھر جا رہی تھیں کہ اسی دوران خدیجہ نے ایک فون کال کے ذریعہ اپنے وکیل چوہدری محمد شفیق کو اطلاع دی کہ اُن دونوں کو نامعلوم افراد نے اغوا کر لیا ہے ابھی کال جاری تھی کہ اغوا کاروں نے اُس سے موبائل فون چھین کر بند کر دیا اور دونوں کو اغوا کر کے لیے گئے جس کی اطلاع خدیجہ کے خالہ زاد بھائی وحید محسن نے فوری طور پر تھانہ شیخ فاضل پولیس کو کر دی اور بتایا کہ دونوں خواتین کو محمد سلیم اُسکے والد یعقوب اور اسکے دو ساتھیوں نے اغوا کر لیا اور وہ دونوں کو قتل کر دیں گے پولیس کی جانب سے مغوی خواتین کا سراغ نہ لگانے پر وحید محسن نے ایڈیشنل سیشن جج بورے والا کی عدالت میں بھی رٹ پٹیشن دائر کر دی جس میں اُس نے ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرکے انہیں بازیاب کروانے کا مطالبہ کیا ہے۔