بلوچستان اسمبلی: 2 کھرب 87 ارب 2 کروڑ سے زائد کا بجٹ منظور

کوئٹہ (آن لائن) بلوچستان اسمبلی نے رواں سال 2016-17ء کیلئے 2 کھرب 87 ارب 2 کروڑ 85 لاکھ 76 ہزار سے زائد کا بجٹ منظور کرلیا جس میں غیر ترقیاتی اخراجات کیلئے 2 کھرب 15 ارب 84 کروڑ 34 لاکھ 63 ہزار 260 جبکہ ترقیاتی اخراجات کیلئے 71 ارب 18 کروڑ 24 لاکھ 13 ہزار سے زائد منظور کرلئے گئے۔ اجلاس سپیکر راحیلہ حمید درانی کی صدارت میں شروع ہوا۔ اجلاس میں وزیراعلیٰ ثناء اللہ زہری نے مطالبات زر پیش کر تے ہوئے کہا ہے کہ 13 ارب 47 کروڑ 15 لاکھ 35 ہزار روپے سے متجاوز نہ ہو وزیراعلیٰ کو ان اخراجات کی کفالت کیلئے عطاء کی جائے جو مالی سال کے اختتام 30 جون 2017ء کے دوران بسلسلہ مد ’’عمومی نظم ونسق بشمول ریاستی ادارہ جات مالی انتظامیہ، اقتصادی ضوابط، شماریات واطلاعات برداشت کرنے پڑیں گے۔ وزیرخزانہ تحریک پیش کریں گے کہ ایک رقم جو 73 کروڑ 35 لاکھ 78 ہزار 600 روپے سے متجاوز نہ ہو۔ وزیراعلیٰ کو ان اخراجات کی کفالت کیلئے عطاء کی جائے جو مالی سال کے اختتام 30 جون2017ء کے دوران بسلسلہ مد’’صوبائی محصول‘‘ برداشت کرنے پڑیں گے۔ وزیرخزانہ تحریک پیش کریں گے کہ ایک رقم جو 3 کروڑ26 لاکھ 52 ہزار9 سو روپے سے متجاوز نہ ہو وزیراعلیٰ کو ان اخراجات کی کفالت کیلئے عطاء کی جائے جو مالی سال کے اختتام 30 جون2017ء کے دوران بسلسلہ مد’’اسٹامپس‘‘ برداشت کرنے پڑیں گے۔ وزیرخزانہ تحریک پیش کریں گے کہ ایک رقم جو 12 ارب 69 کروڑ 8 لاکھ 84 ہزار 170 روپے سے متجاوز نہ ہو۔ وزیراعلیٰ کو ان اخراجات کی کفالت کیلئے عطاء کی جائے جو مالی سال کے اختتام 30 جون2017 کے دوران بسلسلہ مد’’پنشن‘‘ برداشت کرنے پڑیں گے۔ ایک رقم جوایک ارب 65 کروڑ92 لاکھ79 ہزار 900 روپے سے متجاوز نہ ہو۔ وزیراعلیٰ کو ان اخراجات کی کفالت کیلئے عطاء کی جائے جو مالی سال کے اختتام 30 جون2017ء کے دوران بسلسلہ مد’’ایڈ منسٹریشن آف جسٹس‘‘ برداشت کرنے پڑیں گے۔ایک رقم جو23 کروڑ 31 لاکھ 86 ہزار 760 روپے سے متجاوز نہ ہو وزیراعلیٰ کو ان اخراجات کی کفالت کیلئے عطا کی جائے جو مالی سال کے اختتام 30 جون 2017ء کے دوران بسلسلہ مد’’پراسیکیوشن ڈیپارٹمنٹ‘‘ برداشت کرنے پڑیں گے۔