بلوچستان سے 95 فیصد دہشت گردی ختم کر دی: وزیراعلیٰ

کوئٹہ (بیورو رپورٹ) وزیراعلیٰ بلوچستان نواب ثناء اللہ خان زہری نے کہا ہے کہ معصوم اور بے گناہ لوگوں کو مارنے سے آزادی حاصل نہیں ہو سکے گی۔ دہشت گرد آخری سانسیں لے رہے ہیں۔صوبے سے 95 فیصد دہشت گردی کا خاتمہ کردیا ہے اور اب دہشت گرد آسان ہدف تلاش کر کے بے گناہ لوگوں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔ بچے کھچے دہشت گردوں کا بھی جلد خاتمہ کر دیا جائیگا۔ یہ بات انہوں نے سول ہسپتال کوئٹہ میں گزشتہ روز عالمو چوک بم دھماکے کے زخمیوں کی عیادت کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہی۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پہلے کبھی دہشت گردوں کے سامنے جھکے تھے اور نہ اب جھکیں گے۔ آخری دہشت گرد کے خاتمہ سے چین سے نہیں بیٹھیں گے۔اسمبلی سے خطاب۔ ثناء اللہ خان زہری نے کہاکہ جمہوریت میں اچھی چیزوں کو سراہا جانا اور خامیوں پر تنقید اور ان سے اصلاح ہوتی ہے۔ جب ہم حکومت میں آئے تو کچھ معاملات عجیب تھے۔ عوام محفو ظ نہیں تھے۔ جب ہم اتحادی حکومت بنانے جارہے تھے تو میں نے سب سے پہلے یہ نعرہ لگایا تھا کہ ہم بلوچستان کو پُرامن بنائیں گے اور ہم نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کی تحفظ سے بلوچستان کو امن کا گہوارہ بنادیا ہے۔ اس وقت کنفلکیٹ زون میں رہے ہیں ہم سی پیک لارہے ہیں ایسے میں بعض قوتوں کی کوشش ہے کہ بلوچستان کو ڈسٹرب کیا جائے۔ ملک میں کوئی بڑا واقعہ ہو تو بھی اسے اہمیت نہیں دی جاتی مگر بلوچستان میں چھوٹا واقعہ بھی ہو جائے تو اسے میڈیا میں بڑا چلا کر پیش کیا جائے ہم وار زون میں رہے ہیں اور ہمارے سیکورٹی ادارے بڑی جنگ لڑرہے ہیں‘ ہم بزدل نہیں ہم کبھی دہشت گردی قبول نہیں کرینگے‘ ہم نے دہشت گردی کی خاتمے کیلئے قربانیاں دی ہیں اور دیں گے نہ پہلے دہشت گردی کے خلاف سر جھکایا ہے اور نہ آئندہ جھکائیں گے اس کیلئے بڑی قیمت دی ہے۔