یکطرفہ امن قائم نہیں ہوسکتا‘ پاکستان کو دہشت گردوں کیخلاف سخت اقدامات کرنا ہونگے: بھارت

نئی دہلی (آن لائن+ اے پی پی) بھارتی وزیر دفاع اے کے انتھونی نے جمعرات کو یونیفائیڈ کمانڈرز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہماری مسلح افواج کو ایسی طاقتوں سے نمٹنے کیلئے مکمل طور پر تیار رہنا ہوگا جو ہمارے معاشرے کو نقصان پہنچانا چاہتی ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ پاکستان کے ساتھ امن کسی صورت بھی یکطرفہ نہیں ہوسکتا۔ امن مذاکرات کی بحالی کیلئے پاکستان کی طرف سے دہشت گردوں کے خلاف سخت ترین کارروائی پیشگی شرط ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی طالبان نہ صرف بھارت بلکہ دنیا کیلئے بڑا خطرہ ہیں۔ سرحد پار سے دراندازی میں کمی کے باوجود مقبوضہ کشمیر اور مغربی سرحد پر فوج کی تعداد میں کمی نہیں کرسکتے۔ انہوں نے کہا کہ سرحد پار سے دراندازی میں کمی آئی ہے لیکن ہم یہ نہیں کہہ سکتے کہ صورتحال میں بہتری آئی ہے کیونکہ سرحد کی دوسری جانب دہشت گرد اب بھی سرگرم ہیں لہٰذا بھارت کو فوجی سرحد پر بڑا چوکنا اور چوکس رہنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے تعلقات بہتری کی جانب بڑھ سکتے ہیں تاہم پاکستان کی اندرونی صورتحال انتہائی خراب ہے۔ ہم اسلام آباد کو پاکستان کی سرزمین سے بھارت مخالف عناصر کی سرکوبی کیلئے آمادہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ پاکستان کے ساتھ تعلقات دہشت گردوں کے خلاف کریک ڈائون کے آغاز کے بعد ہی معمول پر آسکتے ہیں۔