شام‘ عراق میں داعش کے زور پکڑنے سے پاکستان میں طالبان کی کمر ٹوٹ رہی ہے : برطانوی اخبار

لندن (آن لائن) برطانوی اخبار”گارڈین“ لکھتا ہے کہ داعش کے زور پکڑنے سے پاکستان میں طالبان کی کمر ٹوٹ رہی ہے۔شمالی وزیر ستان میںپاک فوج کے آپریشن نے ان کو بھاگنے پر مجبور کردیا ہے۔ تحریک طالبان پاکستان 4گروپوں میں تقسیم ہو چکی ہے۔ تحریک طالبان کو اس وقت داعش کے چیلنج کا سامنا ہے۔ اخبار لکھتا ہے کہ شام اور عراق میںداعش کا ڈرامائی انداز میں طاقت پکڑنا پاکستانی طالبان کا شیرازہ بکھیرنے میں معاون ہو رہا ہے۔ خودساختہ عالم اسلام کی قیادت کا دعویٰ کرنے والے ابو بکر البغدادی نے تحریک طالبان پاکستان کی حیثیت کو کمزور کردیا ہے جس کے علامتی سربراہ ملا عمر ہیں۔ تحریک طالبان پاکستان کے آپس کے انتشار اور شمالی وزیرستان میں ان کی ٹھکانوں کی تباہی سے نقصانات کے بعد پاکستان میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں کمی آئی ہے۔
لیکن تجزیہ کاروں نے خبردار کیا کہ تحریک طالبان اورر دیگر ذیلی گروپ اپنی کارروائیوں سے بڑا نقصان پہنچانے کو ثابت کرنے کے لئے بے چین ہیں۔شاہد اللہ شاہد نے ا خبار کو بتایا کہ وہی اصلی ٹی ٹی پی ہیں اور شمالی وزیر ستان کے نقصان نے انہیں متاثر نہیں کیا۔اس کا کہنا تھا کہ جب شمالی وزیرستان آپریشن شروع ہوا تو وہ اپنے وسائل محفوظ مقامات پر منتقل کر چکے تھے۔انہوں نے کہا کہ صدر مقام تبدیل ہونے سے نظریات، حکمت عملی اور دشمن کو تباہ کرنے کی خواہش تبدیل نہیں ہوتی۔
برطانوی اخبار