کراچی ٹارگٹ کلنگ، فائرنگ کے مختلف واقعات اب تک مزید آٹھ افراد قتل، دو دنوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد سترہ ۔

کراچی میں ہونے والی ٹارگٹ کلنگ کے دوران رات سے اب تک مختلف علاقوں میں آٹھ افراد ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ صبح لانڈھی چھتیس بی میں دہشتگردوں نے فائرنگ کرکے ایک شخص کو ہلاک کردیا جبکہ کورنگی ویٹا چورنگی میں نامعلوم شخص کو ہلاک کردیا گیا ۔ کریم آباد پل کے نیچے چالیس سالہ عدنان کو ہلاک کر دیا گیا ملزمان عدنان کی لاش غریب آباد کچرا کنڈھی میں پھینک کرفرار ہوگئے۔ مواچھ گوٹھ کچھی پاڑہ میں گھر میں گھس کر بائیس سالہ صدیق کو ہلاک کیا گیا ۔ نیپئرروڈ کے علاقے سے تشدد زدہ لاش ملی ہے جس کی شناخت فرقان کے نام سے ہوئی ہے، پولیس کے مطابق ملزمان نے فرقان کو اغواء کرنے کے بعد سرپر گولی مارکرہلاک کیا اور اسکی لاش بوری میں بند کرکے پھینک کرفرار ہوگئے ۔ سہراب گوٹھ فلائی اوورکے نیچے کیبن پر بھیٹے پنتیس سالہ شخص نظرمحمد کوفائرنگ کرکے ہلاک کیا گیا جبکہ لانڈھی ریلوے گراؤنڈ سے ایک شخص کی لاش ملی ہے، اُدھر سچل گلزار ہجری کے علاقے میں تیس سالہ شخص کوہلاک کیا گیا جبکہ اورنگی ٹاون پیرآباد قصبہ کالونی لیاقت آباد، نیوکراچی شاہ فیصل اورنگی ٹاون اور دیگر علاقوں میں حالات کشیدہ ہیں۔ گزشتہ روز ٹارگٹ کلنگ کے حوالے سے تاجر برادری نے بھی احتجاج کیا ہے۔ انہوں نے حکومت سے انھیں تحفظ فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ اُن کا کہنا ہےکہ رواں ماہ کے دوران صرف گیارہ دن کاروبار ہوا جس میں اُنہیں پندرہ ارب روپے کا نقصان ہواہے۔