پاکستان افغانستان مےں امریکی حکمت عملی کی حمایت کرتا ہے: شاہ محمود

قاہرہ (ریڈیو نیوز / وقت نیوز / اے ایف پی/ ایجنسیاں) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان افغانستان مےں امریکی حکمت عملی کی حمایت کرتا ہے قاہرہ مےں مصر کے صدر حسنی مبارک سے ملاقات مےں گفتگو کرتے انہوں نے کہا کہ افغانستان مےں امن و استحکام پاکستان کے مفاد مےں ہے، پاکستان دیرینہ ہمسائے بھارت کے ساتھ مستحکم تعلقات چاہتا ہے، پاکستان بھارت مذاکرات جولائی مےں ہوں گے۔ وزیر خارجہ شاہ نے مصر میں اپنے مصری ہم منصب احمدابو الغائت سے ملاقات کے دوران پاکستان اور مصر کے دوطرفہ تعلقات پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔ دونوں وزراءخارجہ نے اس موقع پر دو طرفہ باہمی دلچسپی کے علاقائی اور بین الاقوامی معاملات پر بھی بات چیت کی۔ انہوں نے پاکستان مصر مشترکہ وزارتی کمیشن کے اجلاس کی صدارت کی وزارتی اجلاس کے دوران دونوں ممالک کے درمیان تعاون کا جائزہ لیا گیا اور تجاویز دی گئیں۔ اس موقع پر بیس سے زائد شعبوں میں تعاون کے فروغ پر اتفاق کیا گیا جن میں معیشت ، تجارت ، سرمایہ کاری ، پبلک و سول سروسز ، صحت ، زراعت اور پوسٹل کے شعبے شامل ہیں۔ اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا کہ دونوں ممالک متبادل توانائی کے شعبے میں خصوصاً ”ونڈ پاور“ کے شعبے میں تعاون کو فروغ دیں گے جبکہ دونوں ممالک کے درمیان کاروباری روابط بڑھانے پر بھی زور دیا گیا۔ اس موقع پر دونوں وزراءخارجہ نے پاکستان فارن سروسز اکیڈمی اور مصرکے انسٹی ٹیوٹ فار ڈپلومیٹک سٹڈیز کے درمیان مفاہمت کی یاداشت پر بھی دستخط کئے ۔ دونوں وزراءخارجہ کی موجودگی میں مصر میں پاکستانی سفیر سیما نقوی اور مصر کے اسسٹنٹ وزیر خارجہ برائے ایشیائی امور احمد فتح اللہ نے سائنس و ٹیکنالوجی میں تعاون کے دوسرے ایگزیکٹو پروگرام پر دستخط کئے۔ پاکستان اور مصر کے وزراءخارجہ نے اس موقع پر علاقائی اوربین الاقوامی اہم امورپر بھی تبادلہ خیال کیا جن میں مشرق وسطیٰ میں امن عمل افغانستان ، سوڈان ، پاک بھارت تعلقات اور نیل بیسن اقدامات پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اپنے مصری ہم منصب کو دو طرفہ تعلقات کو مضبوط بنانے کے حوالے سے پاکستانی قیادت کی خواہش سے آگاہ کیا۔ قاہرہ میں تیسرے اجلاس کے اختتام پر شاہ محمود قریشی نے اپنے ہم منصب کے ساتھ میڈیا کو بتایا کہ اکیس شعبوں میں تعاون پر دونوں ممالک کے درمیان اتفاق رائے ہو گیا ہے۔ پاکستان اور مصر کے درمیان مشترکہ وزارتی کمشن کا تیسرا اجلاس قاہرہ میں ختم ہو گیا۔ اجلاس کے بعد دونوں رہنماﺅں نے مشترکہ نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایران کے نیوکلیئر معاملے پر دونوں ممالک ترکی اور برازیل کے درمیان اتفاق رائے کی حمایت کرتے ہیں۔