کشمیر جنوبی ایشیا کیلئے ٹائم بم جیسا خطرہ ہے، امریکہ مسئلہ حل کرائے: شاہ محمود

بوسٹن (این این آئی) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کشمیر کو پاکستان بھارت کے د رمیان کشیدگی کی بنیاد اور جنوبی ایشیا میں ٹائم بم جتنا خطرہ قرار دےتے ہوئے اوباما انتظامیہ پر زور دیا ہے کہ وہ مسئلہ کشمیرکو حل کرانے میں فیصلہ کن کردار ادا کرے۔پاکستان بھارت کے ساتھ کشمیر سمیت تمام تصفیہ طلب معاملات پر امن مذاکرات کے ذریعے حل کرنے کا خواہاں ہے۔ کشمیر میں جو کچھ ہو رہا ہے اس میں پاکستان کا کوئی ہاتھ نہیں ہے بلکہ یہ بھارت کی ہٹ دھرمی اور کشمیریوں کو نظر انداز کرنے کا ردعمل ہے جو کشمیری اپنے حق کے حصول کیلئے محو جدوجہد ہیں۔ بوسٹن میں پاکستانی کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگر کشمیر جےسے دہائیوں پرانے تنازعات کو حل کر لیا جائے تو دہشت گردوں یا انتہاپسندوں کے آکسیجن کو کم کیا جا سکتا ہے ۔ وزیر خارجہ نے جموں وکشمیر چھوڑ دو تحریک کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ دہائیوں سے بھارت کا یہ موقف رہا ہے کہ پاکستان کی ایماپر ہی کشمیر میں علیحدگی پسند تحریک چلائی جا رہی ہے لیکن اب ساری دنیا اس حقےقت سے آگاہ ہو چکی ہے کہ کشمیریوں کی تحریک ان کی اپنی ہے جس کو منزل مقصود تک پہنچانے کیلئے ہر کشمیری طرح طرح کی قربانیاں دےنے کے ساتھ ساتھ بے پناہ مظالم اور ناانصافےاں بھی جھیل رہے ہیں۔