بھارت کی طرف سے پانی روکنے پر دریائے چناب پھر خشک

سیالکوٹ (نامہ نگار) بھارت کی طرف سے درےائے چناب کا پانی روکے جانے کے بعد ہیڈمرالہ کے مقام پر دریا دوبارہ خشک ہونا شروع ہوگےا ہے ۔ ایکسین ایری گےشن مرالہ تبسم شفےق کا کہنا ہے کہ دریائے چناب میں پانی کی آمد چھ ہزار چار سو کیوسک ہے جوکہ سندھ طاس معاہدہ سے بہت کم ہے اورا س وجہ سے دریائے چناب سے ہیڈمرالہ کے مقام پر نکلنے والی دو نہروں میں سے ایک نہر مرالہ راوی لنک مکمل طور پر بند ہے‘ واضح رہے کہ سندھ طاس معاہدہ کے تحت بھارت دریائے چناب میں روزانہ 55ہزار کیوسک پانی چھوڑنے کا پابند ہے لیکن گزشتہ ساڑھے چار ماہ سے زائد عرصہ سے بھارت نے دریائے چناب کا پانی مقبوضہ کشمیر میں دریا پر متنازعہ بگلہیار ڈےم پر روک رکھا ہے چند روز قبل بھارتی واٹر کمشنررنگاناتھن کی قیادت میںپاکستان کے دورے پرآئے اس دوران دریائے چناب میںاچانک ایک لاکھ پنتالیس ہزار کیوسک پانی چھوڑ دیا گیا لیکن بھارتی وفد کے واپس بھارت چلے جانے کے بعد بھارت نے دوبارہ دریائے چناب کا پانی روک لیا پانی کی کمی کی وجہ سے سیالکوٹ سمیت مختلف اضلاع میں پندرہ لاکھ ایکٹر سے زائد رقبہ پر کاشت شدہ گندم کی فصلوں کو نقصان پہنچ رہا ہے ۔