حریت کانفرنس اور بھارت کے درمیان خفیہ مذاکرات التواءکا شکار

سرینگر (آن لائن) مقبوضہ کشمیر میں سانحہ شوپیاں کے حوالے سے سی بی آئی کی حالیہ متنازعہ رپورٹ پر تمام مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے تشویش وحیرت کا اظہار کیا ہے جس کی وجہ سے حریت پسندوں اور بھارتی حکومت کے درمیان خفیہ سفارتکاری کا عمل بھی التواءکا شکار ہوگیا ہے ایک ریاستی اخبار کی رپورٹ کے مطابق شوپیاں سانحہ پر حالیہ رپورٹ کے بعد وادی میں پیدا شدہ ارتعاش کے پیش نظر مرکزی حکومت نے خفیہ ڈپلومیسی کو فی الحال التواءمیںڈالنے کا فیصلہ کیا ہے اور اب حریت کانفرنس کے رہنماﺅں کے دورہ پاکستان سے واپسی کے بعد ہی باضابطہ مذاکرات متوقع ہیں مقبوضہ کشمیر میں محرم الحرام کے جلوسوں پر پابندی کیخلاف احتجاجی مارچ کیا گیا جبکہ بھارتی وزیر داخلہ چدمبرم نے کہا ہے سانحہ شوپیاں پر سی بی آئی رپورٹ کو مسترد کرنا حیران کن ہے۔ دوسری طرف سماج وادی پارٹی کے ترجمان نے کہا یہ رپورٹ مضحکہ خیز ہے۔