بلدیاتی نظام کو جاری رہنا چاہئے : ڈپٹی میئر گلاسگو سٹی

لاہور (شعیب الدین+ اعظم چودھری) گلاسگو سٹی کونسل کے ڈپٹی میئر اور ایگزیکٹو ممبر برائے انٹرنیشنل افیئرز حنظلہ ملک نے کہا ہے کہ پاکستان میں موجودہ بلدیاتی نظام کو جاری رہنا چاہئے۔ اگر اس نظام کو ختم کرکے ایڈمنسٹریٹر تعینات کر دئیے گئے تو ہمارے لئے ان کے ساتھ کام کرنا مشکل ہو گا۔ وہ گذشتہ روز نوائے وقت سے خصوصی ملاقات میں لاہور اور گلاسگو کو جڑواں شہر قرار دینے کے بعد ہونیوالے تجربے کے حوالے سے بات چیت کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ضلع ناظم لاہور میاں عامر محمود کی کاوشوں سے لاہور اور گلاسگو جڑواں شہر قرار پائے تھے جس کے بعد ماحولیات، ٹریفک، انفراسٹرکچر، ہائی ویز اور بائی ویز، لائبریری اور میوزیم، ثقافتی ورثہ، پارکنگ و پارکس کیلئے کام شروع کیا گیا۔ ہم نے لاہور کے فائبر فائٹرز کو دو فائر انجن دیدئیے ہیں اور 3 مزید فائر انجن جلد دیدئیے جائیں گے۔ ضلع ناظم لاہور کے کہنے پر 1122 کی ٹریننگ کا پروگرام طے پایا۔ 1122 کے بارہ افسران گلاسگو سے ٹریننگ لیکر آ چکے ہیں۔ یہ ٹریننگ فائر فائٹنگ، فائر انوسٹی گیشن، کمیونٹی ایجوکیشن اور آگ سے بچا¶ کے اقدامات کے بارے تھی۔ یہ 12 افسر اب ماسٹر ٹرینر کے طور پر 1122 کے دیگر عملے کو تربیت دینے کی اہلیت رکھتے ہیں اور 1122 کیلئے بھی ایک فائر انوسٹی گیشن یونٹ بھی قائم کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لاہور میں تعلیمی سہولیات بہتر بنانے کے حوالے سے بھی تعاون کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ان کا دوسرا گھر ہے۔ انہیں یہاں آ کر دلی خوشی ہوئی ہے۔ نئے بلدیاتی نظام کی افادیت کا مظاہرہ انہوں نے اپنے گا¶ں اور ملحقہ علاقوں میں خود دیکھا ہے جہاں پر ترقیاتی کام اس طرح ہوئے کہ پہلے کبھی نہیں ہوئے تھے مگر اب بلدیاتی نظام کے خاتمے کی بات ہو رہی ہے۔ اگر ایسا ہوا اور ایڈمنسٹریٹر لگائے گئے تو وہ اسی دلجمعی اور ذاتی دلچسپی سے کام نہیں کریں گے جوکہ ایک منتخب نمائندہ کر سکتا ہے۔