ڈینگی کے بعد کانگو وائرس‘ کوئٹہ میں سینئر سرجن سمیت 5 مریض سامنے آ گئے ‘ پنجاب میں بھی پھیلنے کا خدشہ

کوئٹہ + لاہور (آئی این پی + سٹی رپورٹر ) پاکستان میں سیلاب کی تباہی اور ڈینگی کے بعد اب ”کانگو‘ کی نئی مہلک ترین وبا پھوٹ پڑی‘ کوٹہ کے نجی ہسپتال کے سینئر سرجن سمیت 5مریضوں میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔ حکومت نے وبا کو پھیلنے سے روکنے کے لئے متعلقہ اداروں کو فوری اقدامات اٹھانے کی ہدایات جاری کر دیں۔ تفصیلات کے مطابق جمعہ کو کوئٹہ کے نجی ہسپتال میں افغانستان سے لائے گئے ایک مریض کے آپریشن کے دوران سینئر سرجن ڈاکٹر ایاز اور میڈیکل ٹیکنیشن عمران کی حالت اچانک بگڑ گئی جن کے فوری طور پر خون اور دیگر ٹیسٹ کئے گئے جس سے ان میں کانگو وائرس کی تصدیق ہو گئی۔ ڈاکٹر ایاز کراچی جبکہ عمران کو فاطمہ جناح چیسٹ ہسپتال کوئٹہ میں کانگو کے لئے مختص خصوصی وارڈ میں منتقل کر دیا گیا۔ مقامی ڈاکٹرز کے مطابق کچلاک اور افغانستان سے لائے جانے والے 2 مزید مریضوں میں کانگو وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے۔ پنجاب میں بھی محکمہ لائیو سٹاک اینڈ ڈیری ڈویلپمنٹ نے کانگو وائرس پھیلنے کا خدشہ بھی ظاہر کر دیا ہے۔ تمام ضلعی حکومتوں کو آگاہ کیا ہے کہ حالیہ بارشوں کا پانی نشیبی علاقوں میں کھڑے ہونے کے باعث اور عید قربان کے لئے شہروں میں لائے جانے والے مویشیوں کی وجہ سے کانگو وائرس پھیلنے کا خدشہ ہے۔ ضلعی حکومت سے کہا گیا ہے کہ کانگو بخار سے آگاہی کے لے مہم چلائی جائے اور سلاٹر ہاوسز‘ مویشی منڈیوں اور حویلیوں میں سپرے کروایا جائے جبکہ دیگر صوبوں میں بھی کانگو وائرس سے بچاو کے لئے متعلقہ اداروں کو پیشگی اقدامات اٹھانے کی ہدایات کر دی گئیں۔