کراچی میں ضمنی انتخاب کے موقع پر ٹارگٹ کلنگ کا سلسلہ شدت اختیار کرگیا ۔ مختلف واقعات میں اب تک 28 افراد ہلاک جبکہ ساٹھ سے زائد زخمی ہوگئے ہیں۔

کراچی میں ضمنی انتخاب کے موقع پر ٹارگٹ کلنگ کا سلسلہ شدت اختیار کرگیا ۔ مختلف واقعات میں اب تک 28 افراد ہلاک جبکہ ساٹھ سے زائد زخمی ہوگئے ہیں۔

کراچی میں ہفتے کی شام سے شروع ہونے والی والی ہنگامہ آرائی کا سلسلہ آج بھی جاری ہے، لیاری کے علاقے کلری سے ایک نامعلوم شخص کی بوری بند نعش ملی، جبکہ کلاکوٹ سے دو افراد کی بوری بند لاشیں ملیں جنہیں گلا کاٹ کر قتل کیا گیا تھا، جبکہ کیماڑی کے علاقے میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکےایک شخص کو قتل کردیا، اورنگی ٹاؤن میں باب خیبر کے قریب منی بس پر مسلح ملزمان کی فائرنگ سے پانچ افراد زخمی ہوگئے، جن میں سے دو نے ہسپتال میں دم توڑ دیا، اورنگی ٹاؤن فرنٹیئر موڑ پر نامعلوم افراد نے بازار میں فائرنگ کردی جس  کے نتیجے میں دو دکاندار زخمی ہوگئے، گزشتہ روز فائرنگ کا سلسلہ اورنگی ٹاؤن سے شروع ہوا، جہاں نامعلوم افراد نے سیکٹر تیرہ اور بخاری کالونی میں مسافر بس پر فائرنگ کردی جس کے باعث دو نوجوان جاں بحق ہوگئے، واقعے کے بعد شہر میں بنارس، کٹی پہاڑی، بخاری کالونی، لانڈھی، صدر، سہراب گوٹھ، قائد آباد، ابوالحسن اصفہانی روڈ، گلستان جوہر، نورس چورنگی، گارڈن، بلدیہ ٹاؤن سمیت مختلف علاقوں میں فائرنگ کےبعد کاروباری مراکز بند ہوگئے۔ دھوبی گھاٹ میں فائرنگ سے تین افراد اور پیرآباد میں موٹر سائیکل سواروں کی فائرنگ سے توقیر نامی شخص ہلاک ہوگیا، جبکہ مسکن چورنگی میں ہوٹل پر فائرنگ سےایک شخص جاں بحق، اور تین زخمی ہوگئے، سائٹ کے علاقے نورس چورنگی میں نامعلوم افراد کی فائرنگ میں بھی ایک شخص زندگی کی بازی ہارگیا۔  بلدیہ ٹاؤن کے مختلف علاقوں میں چھ اورکھارادر میں بیکری کے قریب ملزمان کی فائرنگ سے دو افراد ہلاک ہوگئے، عید گاہ کے قریب ٹمبر مارکیٹ میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے دو افراد کو ہلاک کردیا، فائرنگ کے واقعات کےبعد پولیس اور رینجرز کو الرٹ کردیا گیا، جبکہ رینجرز نے مختلف علاقوں سے پانچ سے زائد مشتبہ افراد کو گرفتار کیا ہے۔