ڈیرہ مراد جما لی میں بر وہی اور جتو ئی قبا ئل مو رچہ بند ، فائر نگ کا تبا دلہ

ڈیرہ مراد جمالی (نامہ نگار ) نوتال تھانہ کی حدود ربی کینال ٹو میں کئی سالوں سے چلنے والی اراضی کے تنازعہ پر بروہی اور جتوئی قبائل نے مورچہ بند ہوکرایک دوسرے پر جدید ہتھیاروں سے اندھا دھند فائرنگ کی جس سے علاقے میں خوف ہراس پھیل گیا عورتوں بچوں بوڑھوں کی چیخ وپکار مخالفین نے پانچ گھروں کو آگ لگا دی گھریلو سامان جل کر خاکستر ہوگیا جبکہ مسلح افراد نے ایک عورت مسماۃ گنج خاتون کو دو بچوں عبدالفتح جتوئی عمر سات سال مائی مومل جتوئی عمر چار سال سمیت پانچ افراد کے اغواء ہونے کی تحریری اطلاع پولیس تھانہ نوتال میں دے دی گئی ہے موضع جتوئی میںدونوں قبائل جدید اسلحہ سے مورچہ بند ہونے کی وجہ سے خونیں تصادم ہونے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے مسلح تصادم کے نتیجے میںعلاقے سے بڑے پیمانے پر نقل مکانی شروع کردی ہے دریں اثناء درخواست گزار محمد عمرجتوئی نے اپنی بیوی بچوں کی اغواء کی درخواست پولیس تھانہ نوتال میں دینے کی تصدیق کرتے ہوئے وزیراعلی ٰ بلوچستان آئی جی پولیس بلوچستان سے مغویوں کی جلد بازیابی پولیس کی جانب داری کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے جبکہ ایس ایچ او پولیس خان محمد حسنی نے موضع جتوئی میں بروہی اور جتوئی کے درمیان مسلح تصادم کی تصدیق کرتے ہوئے جتوئی برادری کے دوافراد ممتاز جتوئی اور نصیر جتوئی کی گرفتاری کی تصدیق کی ہے ۔