پی آئی اے انتظامیہ کا مہنگی ویٹ لیز پر حاصل ایئر بسوں کی دیکھ بھال پر بدترین کارکردگی کا مظاہرہ، 14 ارب کی گرانٹ ڈوبنے کا خطرہ

اسلام آباد ( آئی این پی ) پی آئی اے انتظامیہ کا مہنگی ویٹ لیز پر حاصل کیے گئے ایئربس جہازوں کی دیکھ بھال کے حوالے سے بدترین کارکردگی کا مظاہرہ ، حال ہی میں ویٹ لیز پر حاصل کردہ 6 ایئر بس 320 طیاروں میں سے دو گراﺅنڈ کردیئے گئے جبکہ 4 بمشکل فعال حالت میں ہیں ، قومی خزانہ سے دیئے گئے 14 ارب کی گرانٹ ڈوبنے کا خطرہ ہے جبکہ لیز حاصل کئے گئے 9 اے 310 طیاروں میں صرف 5 فعال حالت میں ہیں ، 3 اے 310 طیارے پی آئی اے ملازمین نے ناکارہ کردیا جبکہ ایک گراﺅنڈ ہوچکا ہے ۔ پی آئی اے کے پاس موجود36 ہوائی جہازوں میں اس وقت 25 فعال حالت میں ہیں جبکہ 6 گراﺅنڈ ہوچکے ہیں اور 5 ناکارہ قرار دیئے جا چکے ہیں ۔ ہفتہ کو قومی ایئر لائن کے ذرائع نے بتایا پی آئی اے حکام نے وفاقی حکومت کو منتیں ترلے کرکے 14 ارب روپے کی گرانٹ لیکر جو 6 ائیر بس 320 جہاز ویٹ لیز پر حاصل کیے تھے ان میں سے دو جہاز پی آئی اے کے انجینئرز کی غفلت اور کرپشن کی وجہ سے گراﺅنڈ ہوچکے ہیں اور جو 4 ایئر بس 320 جہاز فعال حالت میں ہیں ان کی کارکردگی بھی گزار لائق ہیں اگر حکومت نے نوٹس نہ لیا تو مہنگی ترین ویٹ لیز پر حاصل کردہ دو مزید ایئر بس 320 جہاز کسی بھی وقت گراﺅنڈ ہوسکتے ہیں ۔ پی آئی اے کے بعض انجینئرز اور اعلیٰ حکام چھ کے چھ ایئر بس 320 طیاروں کو دو دو کرکے پہلے مرحلے میں گراﺅنڈ کرنے اور بعد ازاں ناکارہ قرار دیکر سکریپ کی صورت میں ایک نجی کمنپی کو فروخت کرنے کی منصوبہ بندی مکمل کرچکے ہیں۔ چھ ایئر بس 320 طیارے پی آئی اے کے فلیٹ میں شامل ہوئے ہیں۔ ماضی میں پی آئی اے کی جانب سے لیز پر لئے گئے 9 ایئر بس 310 طیاروں میں سے اس وقت صرف 5 فعال ہیں جبک ہپی آئی اے کے انجینئرز بقیہ 4 طیاروں میں سے تین کو ناکارہ قررا دے چکے ہیں۔ 4 ایئر بس 310 طیاروں کو جلد ہی سکریپ کی صورت میں ایک نجی کمپنی کے ہاتھوں فروخت کیا جائے گا ۔پی آئی اے کے فلیٹ میں شامل 36 طیاروں میں سے اس وقت صرف 25 فعال حال تمیں ہیں جبکہ 6 ضرور مرمت کے نام پر گراﺅنڈ اور 5 ناکارہ قرار دیئے جا چکے ہیں۔

بدترین مظاہرہ