سوات: مقامی جرگہ نے والدین کی مرضی سے 14سالہ لڑکی کو سورہ میں دیدیا

سوات (اے پی پی) سوات کی تحصیل مٹہ میں چچا کے جرم کی سزا بھتیجی کو دیدی گئی، مقامی جرگہ نے والدین کی مرضی سے 14سالہ لڑکی کو سورہ میں دیدیا، چپریال پولیس نے لڑکی کی اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے لڑکی کے باپ اور چچا سمیت 10افراد کے خلاف مقدمہ درج کرلیا، متاثرہ بچی کے باپ، چچا اور نکاح خوان سمیت چار ملزمان کو حراست میں لیکر عدالت نے دو روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا۔ ایس ایچ او تھانہ چپریال شہنشاہ خان کے مطابق پولیس کو اطلاع ملی تھی کہ نواحی علاقے گوالیرئی کے موضع سیدڑہ میں 14سالہ بچی مسماة عالیہ کو مقامی جرگہ نے حمید اللہ کو سورہ میں دیدیا اور مولوی محمد رحمن ولد حبیب الرحمن نے ان کا نکاح بھی کروا دیا ہے۔ اطلاع ملنے پر پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے متاثرہ لڑکی کے باپ فیروز خان اور چچابا چاذادہ پسران وزیر، نکاح خواں مولانا محمد رحمن، لڑکے حمید اللہ، لڑکے باپ خیبر اور جرگہ ممبران گل رحمن، مسین ذادہ، نقشے ولد شڈل، سعداللہ، اکبرخان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔ پولیس کے مطابق متاثرہ لڑکی عالیہ کے چچا نے کچھ عرصہ قبل مخالف فریق کی ایک لڑکی کو اغوا کیا تھا۔
لڑکی/ سورہ