نئی حلقہ بندیاں، قرضہ سکیم بلدیاتی الیکشن سے پہلے دھاندلی کے منصوبے ہیں: منظور وٹو

راولپنڈی (آئی این پی) پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر او رسابق وزیر اعلیٰ پنجاب میاں منظور احمد وٹو نے کہا ہے کہ نئی حلقہ بندیاں اور وزیر اعظم کی قرضہ سکیم بلدیاتی الیکشن سے قبل دھاندلی کے بڑے منصوبے ہیں جن کا سپریم کورٹ اور الیکشن کمیشن کو فوری نوٹس لینا چاہئے۔  پیپلز پارٹی نے ضلعی سطح پر اپنے مقامی راہنمائوں کو اختیار دے دیا ہے کہ وہ بلدیاتی الیکشن میں تحریک انصاف ، جماعت اسلامی یا کسی بھی دوسری جماعت کے ساتھ مل کر سیٹ ایڈجسٹمنٹ کر لیں۔ وہ  گزشتہ روز فیض آباد کے قریب سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کی رہائش گاہ   پر راولپنڈی ڈویژن سے تعلق رکھنے والے پی پی پی کے رہنمائوں اور ایک خصوصی  مشاورتی اجلاس سے قبل  پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔  منظور  وٹو نے کہا کہ نئی حلقہ بندیوں میں دھاندلی کا اندازہ اس امر سے لگایا جائے کہ قومی اسمبلی کے ایک حلقے میں شامل گائوں کو پڑوس کے دو تین گائوں چھوڑ کر اس سے اگلے دوسرے حلقے کے گائوں کے ساتھ ملا دیا گیا ہے اور یہ ہوائی رابطہ نہ جانے کس طرح ممکن ہوگا۔ ہم ان جعلی لکیروں کو تسلیم نہیں کرتے  انہوں نے مطالبہ کیا کہ بلدیاتی الیکشن 1998 ء کی مردم شماری اور نئی حلقہ بندیوں کے بغیر کرائے جائیں ورنہ ان انتخابات اور الیکشن کمشن کی ساکھ شدید متاثر ہو گی۔