پاکستان کو ہتھیاروں کی فراہمی پر نئی دہلی کے خدشات مدنظر ہیں: امریکہ

نئی دہلی (اے ایف پی+آن لائن) امریکہ نے کہا ہے کہ وہ انسداد دہشت گردی جنگ کیلئے پاکستان کو فراہم کردہ ہتھیاروں کے استعمال کا مشاہدہ کر رہا ہے کہ یہ ہتھیار کہاں استعمال کئے جارہے ہیں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے امریکی نائب وزیر خارجہ برائے دفاع مائیکل فلورنی نے کہا کہ امریکی ہتھیار کے بھارت کے خلاف استعمال کئے جانے کے نئی دہلی کے خدشات اوبامہ انتظامیہ کے مدنظر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ نے پاکستان کے ساتھ واضح طور پر اس بات کا اظہار کیا ہے انسداد دہشت گردی کیلئے فراہم کردہ ہتھیار متعلقہ مقاصد اور نظام کے تحت ہی استعمال ہوں اور ہم اس بات کا مشاہدہ کررہے ہیں کہ یہ ہتھیار کہاں استعمال ہوتے ہیں۔ مائیکل فلورنی نے آئی ایس آئی کے دہشت گرد گروپوں کی مدد کے کردار بارے سوال کا جواب دینے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ ہر قسم کی دہشت گردی کے خلاف جنگ امریکہ کا مضبوط مفاد ہے انہوں نے کہا کہ ہم نے القاعدہ اور لشکر طیبہ کے درمیان مضبوط رابطوں کو دیکھا ہے امریکہ نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کے ساتھ تعاون کے فروغ کا عزم کر رکھا ہے اور اس پر کوئی اختلاف نہیں انہوں نے کہاکہ جب سے پاکستان کے شہروں میں دہشت گردی کے حملے ہوئے ہیں پاکستان کے سیاسی عزم میں تبدیلی آئی ہے جس کا جنوبی وزیرستان اور سوات میں مظاہرہ بھی کیا گیا ہے۔