چک جھمرہ: بغیر پھاٹک ریلوے کراسنگ سے گزرتے ماموں بھانجا ٹرین کے نیچے آ کر جاں بحق

 سانگلہ ہل+فیصل آباد + چک جھمرہ (نمائندہ نوائے وقت +نمائندہ خصوصی + نامہ نگار) چک جھمرہ کے علاقہ میں بغیر پھاٹک ریلوے کراسنگ پوائنٹ سے گزرتے ہوئے شالیمار ایکسپریس کی زد میں آ کر ماموں بھانجا موٹر سائیکل سوار ٹرین کے نیچے آ کر ہلاک ہو گئے۔ سانگلہ ہل کے چک 123ر ب پلیر کا رہائشی40 سالہ اعجاز حسین ولد صدیق اپنے بھانجے احد کے ہمراہ فیصل آباد میں کام کرتا تھا دونوں موٹر سائیکل پر سوار ہو کر فیصل آبادآ رہے تھے 187ر۔ ب کچا جمھرہ سٹاپ کے قریب واقع ریلوے کراسنگ پوائنٹ جہاں دونوں طرف پھاٹک موجود نہیں ہے وہاں سے ریلوے لائن کراس کرنے نے لگے تو لاہور سے کراچی جانے والی شالیمار ایکسپریس کی زد میں آ گئے۔ ٹرین ان دونوں کوموٹر سائیکل سمیت تقریباً ایک سو فٹ تک گھسیٹتی ہوئی لے گئی جس سے دونوں نعشیں ٹکڑوں میں تبدیل ہو گئیں۔ واقعہ کی اطلاع ملنے پر علاقہ میں خوف و ہراس پھیل گیا اور لوگوں کی بڑی تعداد موقع پر جمع ہو گئی۔ تھانہ چک جھمرہ اور تھانہ ریلوے پولیس کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی اور دونوں کے لواحقین کو اطلاع کر کے نعشیں تحویل میں لے کر پوسٹمارٹم کیلئے الائیڈ ہسپتال فیصل آباد میں منتقل کر دیں۔والدین پر سکتہ طاری، مرحومین کو سپرد خاک کر دیا گیا۔معززین دیہہ نے وزیراعلیٰ پنجاب میاں  شہباز شریف سے غریب خاندان  کی معالی معاونت اور ریلوے کراسنگ لیویز پر پھاٹک لگوانے کا مطالبہ کیا ہے۔