بنوں: نادرا نے 13 ہزار جعلی آئی ڈی پیز کی رجسٹریشن مسترد کر دی

بنوں (آئی این پی ) نیشنل ڈیٹابیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) نے  شمالی وزیر ستان سے نقل مکانی کرنے والے  متاثرین میںسے 13 ہزار جعلی آئی ڈی پیز کی رجسٹریشن کو مسترد کردیا  ۔اتوار کوفاٹا ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی (ایف ڈی ایم اے) کے ڈائریکٹر جنرل کے مطابق  نادرا نے اب تک 38 ہزار آئی ڈی پیز کی جانچ پڑتال کی ، جن میں صرف 25 ہزار کے اصل ہونے کی تصدیق ہوئی  ۔انہوں نے کہا کہ جانچ پڑتال کے عمل کے دوران 13 ہزار افراد کے جعلی ہونے کا پتہ چلا ہے۔ انہوں  نے کہا کہ نادرا کی جانب سے جن متاثرہ خاندانوں کی تصدیق کی گئی، صرف انہیں ہی ریلیف اور گرانٹ دی جائے گی۔ غیر ملکی موبائل کمپنی کے17 ہزار رجسٹرڈ سم کارڈز آئی ڈی پیز میں تقسیم کیے گئے ہیں اور پانچ ہزار ایسے خاندان جن کے اصل ہونے کی تصدیق ہوئی ہے وہ مالی امداد اور ریلیف حاصل کرنے کے لیے  اہل ہیں۔ متاثرین کو سم کارڈز کے ذریعے بھی مالی طور پر ریلف کا عمل 8 جولائی سے شروع کیا جائے گا۔ کسی بھی خاندان کہ ایک سے زائد سم کارڈ فراہم نہیں کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے اب تک 330 ملین روپے متاثرہ خاندانوں میں تقسیم کیے گئے ہیں۔