آپریشن سے قبل دہشت گرد داڑھیاں، بال منڈوا کر فرار ہوئے، غیرملکی میڈیا کا دعویٰ

بنوں (اے ایف پی+ اے این این+ آئی این پی) شمالی وزیرستان  میں آپریشن ضرب عضب سے قبل دہشتگردوں کی اکثریت کا داڑھیاں بال منڈوا کر فرار ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔ فرانسیسی خبر رساں ادارے نے دعویٰ کیا ہے شمالی وزیرستان میں آپریشن سے قبل ہی دہشت گردوں کی بڑی تعداد روپ بدل کر علاقے سے نکل چکی تھی۔ شمالی وزیرستان میں حجام اعظم خان نے بتایا آپریشن سے  ایک ماہ قبل تک اس کا کاروبار عروج پر پہنچ چکا تھا۔ جہاں طالبان کی بڑی تعداد اپنے لمبے بال اور داڑھیاں کٹوا کر علاقے سے نکل رہے تھے۔ اعظم کے بقول روپ بدلنے والے ان طالبان کا کہنا تھا وہ خلیجی ممالک کی طرف جا رہے ہیں اور پاکستانی ہوائی اڈوں پر مشکلات سے بچنے کے لئے داڑھیاں اور بال کٹوانا ضروری ہے۔ اعظم خان کے مطابق بال کٹوانے والوں میں مقامی، تاجک اور ازبک دہشت گرد  شامل تھے۔ آپریشن سے پہلے میں نے ذاتی طور پر 700 دہشت گردوں کے بال کاٹے۔ رپورٹ کے مطابق شمالی وزیرستان میں قیام کے دوران  قبائلی عوام خوف کا شکار تھے اور اپنی زبانیں بند کررکھی تھیں مگر  نقل مکانی کے بعد اب بعض لوگوں میں طالبان سے متعلق بات  کرنے کا حوصلہ پیدا ہورہا ہے۔ ایسے ہی ایک  دکاندار حکمت اللہ نے بتایا وہ میرانشاہ میں دکان چلا رہا تھا اور طالبان کمانڈرز کو300 روپے ماہانہ ٹیکس ادا کرنا پڑتا تھا۔ طالبان غیر ملکی اشیاء بالخصوص صابن، شیمپو اور پرفیوم کے دلدادہ ہیں۔  امریکہ، فرانس اور ترکی کی درآمد شدہ اشیاء کو زیادہ پسند کرتے ہیں۔ دتہ خیل میں ہول سیل کا کاروبار کرنے والے  محمد ظریف نے بتایا شدت پسند برطانوی ڈیٹرجنٹ اور امریکہ  کا درآمد شدہ کوکنگ آئل استعمال کرنے  کے علاوہ دبئی سے سمگل کی گئی چیزوں کو زیادہ پسند کرتے تھے۔ رپورٹ کے مطابق  مقامی انٹیلی جنس اور عسکریت پسندوں کے ذرائع کادعویٰ ہے  آپریشن کی  افواہوں اور قیاس آرائیوں کے بعد دہشت گردوں کی بڑی تعداد نے  علاقے سے نکلنا شروع کردیا تھا۔ ایک اندازے کے مطابق 80 فیصد شدت پسند مئی کے شروع میں ہی  علاقہ چھوڑ چکے تھے اور ان کی اکثریت افغانستان منتقل ہوگئی تھی۔ ایک مغربی سفارتکار نے  اے ایف پی کو بتایا  شمالی وزیرستان میں دہشت گرد اس بات سے آگاہ تھے ان کے خلاف  کارروائی ہونے جارہی ہے اس لئے ان کی اکثریت نے پہلے ہی راہ فرار اختیار کرلی تھی۔  اس سے قبل یہ بات بھی سامنے آئی تھی دہشتگردوں نے پاک فوج سے بچنے کے لئے راہ فرار کے وقت خواتین کا روپ دھارا اور برقعے پہن کر بھی فرار کی کوشش کی ،تاہم فورسز نے متعدد کو برقعوں سمیت گرفتار کیا ہے۔
بال/ دعویٰ