جعلی ڈگریوں، پیشہ ورانہ بے ضابطگیوں پر 45 وکلاءکے لائسنس منسوخ

لاہور (اے پی پی) پنجاب بار کونسل ٹربیونل نے جعلی ڈگریوں اور پیشہ وارانہ بے ضابطگیوں کے سنگین الزامات ثابت ہونے پر پنجاب کے مختلف اضلاع کے 45 وکلاءکے لائسنس منسوخ کر دیئے۔جعلی ڈگریاں ثابت ہونے پر جن وکلاءکے لائسنس منسوخ کئے گئے ہیں ان میں لاہور کے عامر ہاشمی ایڈووکیٹ،پرویز اسلم چوہدری ایڈووکیٹ اور ناصر محمودایڈووکیٹ،راولپنڈی سے بابو جہان ایڈووکیٹ، چوہدری مبارک حسین ایڈووکیٹ،کہو ٹہ سے صغیر حسین بھٹی ایڈووکیٹ ، ساہیوال سے اسد لودھی ایڈووکیٹ، زاہد فاروق ایڈووکیٹ ، محمد جاوید ایڈووکیٹ ،جڑانوالہ سے شاہد اقبال ایڈووکیٹ،ٹو بہ ٹیک سنگھ سے رانا ارشاد احمد ایڈووکیٹ،حامد رزاق بھٹہ ایڈووکیٹ،اسلام آباد سے افتخار احمد بھٹی ایڈووکیٹ،فیصل آباد سے محمد سلیم کمبوہ ایڈووکیٹ،محمد سہیل ایڈووکیٹ،سمندری سے مشتاق احمد نعیم ایڈووکیٹ،گجرات سے غضنفر عباس کاظمی ایڈووکیٹ، راجہ محمد راشد احمد جرال ایڈووکیٹ، شیخوپورہ سے انجم سہیل مان ایڈووکیٹ،حافظ آباد سے ملک اصغر علی ایڈووکیٹ، جتوئی سے محمد قاسم مغل ایڈووکیٹ ،حاصل پور سے ناصر محمود جاوید ایڈووکیٹ، شامل ہیں۔ جبکہ پیشہ وارانہ بے ضابطگیوں کے سنگین الزامات ثابت ہونے پر جن وکلاءکے وکالت کے لائسنس منسوخ کئے گئے ان میں لاہور سے بارہ وکلاءراشد الدین قریشی ایڈووکیٹ،سید عشق حسین رضوی ایڈووکیٹ،اسلم ر اجپوت ایڈووکیٹ،محمد اصغر کھوکھر ایڈووکیٹ،بشیر احمد ایڈووکیٹ ،چوہدری لیا قت علی ایڈووکیٹ، عبدالماجد شیخ ایڈووکیٹ،محمد آصف ایڈووکیٹ،شیخ محمد اسماعیل ایڈووکیٹ،عبد القیوم قریشی ایڈووکیٹ،چوہدری عبد الغنی ایڈووکیٹ،شیخ محمد عبد اللہ ایڈووکیٹ، اٹک سے محمد سلیم ایڈووکیٹ،گوجرانوالہ سے عثمان علی خان ایڈووکیٹ،گجرات سے منظور احمد ایڈووکیٹ،چوہدری محمد ریاض ہنجرا ایڈووکیٹ،راولپنڈی سے راجہ غلام ساجد ایڈووکیٹ، غلام ساجد ایڈووکیٹ، ملتان سے ملک اعجاز اعوان ایڈووکیٹ،رحیم یار خان سے چوہدری عبد الغنی ایڈووکیٹ،بہاول نگر سے میاں محمد سیلم ایڈووکیٹ،محمد اقبال وٹو ایڈووکیٹ، ساہیوال سے سردار عمر دراز خان ایڈووکیٹ شامل ہیں ۔ اس حوالے سے چیئرمین ایگزیکٹیو کمیٹی پنجاب بار کونسل چوہدری طاہر نصر اللہ وڑائچ نے بتایا کہ جن وکلاءکے وکالت کے لائسنس منسو خ کئے گئے ہیں انہیں پورا موقع دیا گیا تھا کہ وہ اپنی جعلی ڈگریوں اوراپنے اُوپر لگائے گئے بے ضابطگیوں کے الزامات کو غلط ثابت کریں، پنجاب بار کونسل ٹربیونل نے باقاعدہ سماعت کے بعد ثبوت سامنے آنے پر کارروائی کرکے ان وکلاءکے لائسنس منسوخ کئے ہیں۔ چیئرمین ایگزیکٹیو کمیٹی پنجاب بار کونسل نے کہا کہ اگلے مر حلے میں ایسے وکلاءکے معاملہ کا نوٹس لیا جائے گا جو فل ٹائم و کیل نہیںاور نہ وہ کبھی عدالتوں میں کسی کیس کے سلسلے میں پیش ہوئے بلکہ محض نام کے وکیل ہیں۔
لائسنس منسوخ