عائشہ کے والد کی درخواست پر شعیب ملک کے خلاف جعلسازی کا مقدمہ‘ بغیر اجازت بھارت نہ چھوڑنے کا حکم

حیدرآباد دکن (اے پی پی + مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی پولیس نے پاکستانی کرکٹر شعیب ملک کے خلاف دھوکہ دہی، جہیز کیلئے دباﺅ ڈالنے‘ جعل سازی‘ مجرمانہ عزائم رکھنے کے الزامات میں مقدمہ درج کر لیا۔ شعیب ملک پر مقدمہ بنجارا ہلز پولیس سٹیشن میں عائشہ صدیقی کے والد محمد صدیقی کی درخواست پر درج کیا گیا ہے۔ بنجارا ہلز پولیس سٹیشن کے انسپکٹر اقبال صدیقی نے بھارتی میڈیا کو بتایاکہ محمد صدیقی نے اپنی درخواست میں شعیب ملک پر دھوکہ دہی، خواتین پر مظالم اور مجرمانہ عزائم رکھنے کے الزام لگائے جس پر تعزیرات ہند کی دفعہ 420 (دھوکہ دہی)، دفعہ 498-A (جہیز کیلئے دباﺅ) اور دفعہ 506 (مجرمانہ عزائم) کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ مقدمہ شعیب ملک کی ثانیہ مرزا کے گھر کے باہر میڈیا سے بات چیت کے بعد درج کرایا گیا ہے جس میں شعیب ملک نے کہا کہ وہ پروگرام کے مطابق 15 اپریل کو ہی ثانیہ مرزا سے شادی کر کے پاکستان جائیں گے۔ دیگر اطلاعات کے مطابق شعیب ملک کے بہنوئی عمران ظفر پر بھی مقدمہ بنایا گیا ہے۔ دریں اثنا عائشہ صدیقی نے پاکستانی بیرسٹر فاروق حسن سے بھی رابطہ قائم کر لیا ہے۔ بیرسٹر فاروق حسن نے کہا ہے کہ شعیب ملک کے خلاف مقدمات 72 گھنٹوں کے اندر درج کرا دئیے جائیں گے۔ ثانیہ کے ساتھ شادی رکوانے کے لئے بھی مقدمہ دائر کیا جائے گا۔ شعیب ملک کے خلاف جعلسازی اور ہراساں کرنے کے مقدمات درج کرائے جائیں گے۔ ایف آئی آر کے بعد بعض بھارتی پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ کیس کی نوعیت کو دیکھتے ہوئے شعیب کے خلاف کارروائی کی حکمت عملی طے کی جائے گی۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا تھا کہ شعیب ملک بھارت کے شہری نہیں اس لئے ان کے خلاف کوئی کارروائی کرنے سے پہلے تمام پہلوﺅں کو مدنظر رکھنا ضروری ہو گا۔ دریں اثنا حیدر آباد دکن پولیس کے چیف نے کہا ہے کہ شعیب ملک اجازت کے بغیر بھارت نہیں چھوڑ سکتے‘ شعیب کو کسی وقت پوچھ گچھ کے لئے حراست میں لیا جا سکتا ہے۔ اس حوالے سے پولیس نے تمام ائر پورٹس کو مطلع کر دیا ہے۔ دیگر اطلاعات کے مطابق انہیں حیدر آباد دکن رہنے کا پابند کیا گیا ہے۔ دوسری جانب عائشہ صدیقی نے دعوی کیا ہے کہ شعیب ملک نے خاموش رہنے کیلئے اربوں روپے رشوت کی پیشکش کی تھی۔ ایم اے صدیقی کا کہنا ہے کہ شعیب ملک نے ان کی بیٹی سے شادی کی اور اب وہ اس سے انکار کر رہے ہیں جو غلط ہے۔ میڈیا سے گفتگو میں عائشہ صدیقی نے طلاق لینے کے بعد بھی شعےب ملک کے خلاف قانونی کارروائی کرنے کا اعلان کےا۔ انہوں نے کہا کہ شعیب نے اگر طلاق دے دی تب بھی عدالت سے رجوع کروں گی۔ انہوں نے کہاکہ وہ ذیابیطس کی مریضہ ہیں اورآج کل بہت پریشان ہیں ۔ کئی دنوں سے صحیح طرح سے سو بھی نہیں پائیں۔ وہ پیسے کے لیے نہیں بلکہ اپنے حق کی خاطر لڑ رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان کے پاس ٹھوس شواہد ہیں جنہیں وہ عدالت میں پیش کریں گی اور اپناحق حاصل کرےں گی۔ شعیب ملک کے والد کے دوست شیخ امین نے کہا ہے کہ شعیب کے والد فقیر حسین ‘ عائشہ صدیقی سے نسبت طے ہونے پر بڑے خوش تھے اور کہتے تھے کہ لڑکی شعیب ملک نے خود پسند کی ہے۔ شعیب کے والد نے انہیں بتایا تھا کہ عائشہ کو دیکھنے کے لئے ان کے اہلخانہ بھارت گئے تھے ۔ وہ خود بھی عائشہ کی تصویر دیکھ چکے ہیں اور سارا خاندان بہت خوش ہے۔ شعیب ملک کے عروسی ملبوسات صف اول کے بھارتی ڈریس ڈیزائنر شنتانو اور نکھل تیار کریں گے۔ وہ شاہ رخ اور دوسرے بھارتی سٹارز کے ڈریس ڈیزائنر ہیں۔ شعیب اور ثانیہ کی شادی جہاں تنازعات کے شکار کے باوجود شادی کی تیاریاں بھی زور شور سے جاری ہیں۔ ثانیہ مرزا اپنی شادی کو یادگار بنانے کے لئے ہر ممکن اقدامات کررہی ہیں۔ اس لئے وہ اپنے اور شعیب ملک کے عروسی ملبوسات مشہور بھارتی ڈریس ڈیزائنر شنتانو نکھل سے بنوارہی ہیں۔ ماہر علم نجوم نے پیشگوئی کی کہ شعیب ملک اور ثانیہ مرزا کی شادی ہوگی۔ پاکستان اور بھارت کی دونوں سٹار شادی کے اعلان کے بعد سے ہی مشکل کا شکار ہیں دونوں ممالک میں ایک ہی موضوع زیر بحث ہے کہ ثانیہ مرزا اور شعیب ملک کی شادی اور اس کی کامیابی کے چانس کتنے ہیں۔ ہمایوں محبوب کے مطابق تمام مشکلات کے باوجود یہ شادی ہو گی مشکلات شادی تک جاری رہیں گی۔شعیب کے بہنوئی عمران ظفر نے بھارتی میڈیا سے بات چیت کرتے ہو ئے کہا تھا کہ عائشہ صدیقی یا ان کے خاندان کی جانب سے کسی قسم کا کوئی قانونی نوٹس نہیں ملا‘ شعیب اور ثانیہ کی شادی15 اپریل کو ہی ہوگی ، شعیب ملک طے شدہ شیڈول کے مطابق بھارت پہنچے ہیں، سرفراز نواز کی جانب سے میچ فکسنگ کے بیان پر ردعمل ظاہر کرنا ضروری نہیں، اگر پی سی بی کی جانب سے کوئی بات ہوتی تو وہ اس کی ضرور وضاحت کرتے۔شعیب اور ثانیہ کے خاندانوں کے مابین تناو کے بارے میں پوچھے گئے سوال پر انہوں نے کہا کہ شعیب اور ثانیہ کی جوفوٹیج چلائی جارہی ہے کیا اس سے کسی تناو کا اندازہ ہوتا ہے؟ شادی میں شرکت کے لئے 15 سے20 لوگ بھارت پہنچیں گے۔ ادھر شعیب اور ثانیہ کی شادی کے حوالے سے بھارتی میڈیا اور انتہا پسند ہندو زہریلے پراپیگنڈے میں مصروف ہیں۔ وہ عائشہ صدیقی کے بیانات کو بڑھا چڑھا کر پیش کر رہا ہے۔ ثانیہ نے ٹوئیٹر پر پیغام میں کہا ہے کہ وہ اور ان کا خاندان جانتا ہے کہ سچ کیا ہے انہیں اللہ کے انصاف پر اعتماد ہے۔