پاکستان‘ افغانستان میں آپریشن کے اثرات وسطی ایشیا اور روس پر پڑ رہے ہیں: امریکی اخبار

دوشنبے (مانیٹرنگ نیوز) پاکستان میں عسکریت پسندوں کیخلاف فوجی آپریشن اور افغانستان میں مغربی افواج کی بھرپور کارروائیوں سے عسکریت پسند وسطی ایشیائی ممالک میں پناہ لے رہے ہیں۔ امریکی اخبار ’’دی کرسچن سائنس مانیٹر‘‘ کے مطابق تاجکستان میں عسکریت پسندوں سے حالیہ مقابلوں کے بعد اس بات کی نشاندہی ہورہی ہے کہ پاکستان اور افغانستان میں عسکریت پسندوں کیخلاف جاری لڑائی کے اثرات سرحد پار دیگر ممالک میں نظر آرہے ہیں۔ یہ بھرپور کارروائی غیرملکی عسکریت پسندوں کو دیگر ممالک یا اپنے آبائی وطن بھاگنے پر مجبور کررہی ہے۔ تاجکستان کے وزیر داخلہ کا کہنا ہے کہ افغانستان میں ہونیوالے انتخابات سے پہلے سرحدی صورتحال مزید خراب ہوسکتی ہے۔ کئی جرائم پیشہ گروپس تاجکستان سمیت دیگر ممالک میں پناہ لے سکتے ہیں۔ دوشنبے کی کانفرنس میں افغانستان‘ پاکستان‘ تاجک اور روس کے صدور کے ساتھ علاقائی سلامتی کا مسئلہ بھی زیرغور آیا تھا۔