باپ یا ماں کے نقش قدم پر چلنے کا فیصلہ بلاول نے خود کرنا ہے: ناہید خان

اوکاڑہ (نامہ نگار) پیپلزپارٹی کی ناراض رہنما سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو شہید کی پولیٹیکل سیکرٹری ناہید خان نے کہا ہے کہ چیف الیکشن کمشنر کا جانبدارانہ رویہ ہمارے اور عوام کے مابین ”خلیج“ پیدا نہیں کر سکتا، بلاول کا اصل امتحان اب شروع ہو چکا ہے، باپ کی سیاسی تربیت پر عمل کرتا ہے یا ماں اور نانا کے نقش قدم پر چلتا ہے۔ فیصلہ صرف اس نے کرنا ہے۔ موجودہ صورت حال میں بلاول کا ملک سے باہر جانا بہت سے سوالات کو جنم دے رہا ہے۔ پیپلزپارٹی سے اصل چہرے ہٹاکر ”نمائشی“ اور ”ڈنگ ٹپاﺅ“ چہرے بٹھانے سے اس کی اصل شکل ”مسخ“ کر دی گئی ہے جس سے براہ راست نظریاتی کارکنوں کی حوصلہ شکنی ہوئی ہے اور حقیقی جیالوں نے ”چپ کا روزہ“ رکھ لیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے نظریاتی کارکنوں کے ہمراہ میڈیا سنٹر کے سینئر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ناہید خان نے کہا گذشتہ پانچ سالہ دور حکومت میں پروٹوکول انجوائے کرنے والے پارٹی پر مسلط ”فصلی بٹیرے“ اب خزاں کے پتوں کی طرح پارٹی سے ”جھڑتے“ ہوئے دوبارہ اپنے مفادات کی خاطر ”سیاسی وفاداریاں ”تبدیل کرنے کے لئے“ سیاسی قلابازیاں“ لگا رہے ہیں۔ موجودہ صورتحال میں شہید بی بی کے ویژن کی تکمیل کو ہوتا نہ دیکھ کر دل خون کے آنسو رو رہا ہے۔ خدا کے بعد اپنے ساتھ ہونے والے مظالم اور ناانصافیوں کا فیصلہ قوم پر چھوڑ دیا ہے۔
ناہید خان