بلوچستان اسمبلی نے میانمار میں مسلمانوں پر مظالم کیخلاف متفقہ قرارداد منظور کرلی

کوئٹہ (آئی این پی) بلوچستان اسمبلی نے میانمار میں مسلمانوں پر ظلم کے خلاف قرار متفقہ طور پر منظور کرلی، موبائل فون کی خرید و فروخت کے لئے اصل خریداری رسید اور قومی شناختی کارڈ کی کاپی لازمی قرار دینے سے متعلق قرار داد بھی متفقہ طور پر منظور کر لی گئی۔ وزیر تعلیم عبدالرحیم زیارتوال نے اپنی اور نواب محمدخان شاہوانی کی مشترکہ قرار داد پیش کی جس میں صوبائی حکومت سے سفارش کی گئی تھی کہ وہ وفاقی حکومت سے رجوع کرے کہ تمام نئے و پرانے موبائل فونز کی خریدو فروخت کے لئے اصل خریداری رسید بمعہ خریدار کی مصدقہ شناختی کارڈ کی نقل کو سختی سے نافذ کیا جائے تاکہ موبائل چوری کی روک تھام کو یقینی بنایا جا سکے۔ میانمار کے مسلمانوں پر ظلم و ستم کے خلاف مشترکہ قرار داد پشتونخوا میپ کے آغا سید لیاقت نے پیش کی جس میں کہا گیا تھا کہ بنگلہ دیش کی سرحد کے قریب میانمار کے جنوبی علاقے میں بسنے والے لاکھوں مسلمانوں پر عرصہ حیات تنگ کردیا گیا ہے ان کا قتل عام کرکے اجتماعی قبروں میں انہیں دفنایا جارہا ہے خواتین اور محصور بچوں کو بھی انتہائی اذیت ناک ظلم و ستم کا نشانہ بنایا جارہا ہے اس کے باوجود اقوام متحدہ ، سلامتی کونسل اور ایمنسٹی انٹرنیشنل سمیت دیگر ادارے مسلمانوں کے ساتھ ہونے والے اس انسانیت سوز سلوک پر خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں قرار داد میں وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا گیا تھا کہ وہ اس انسانی مسئلے کو بین الاقوامی سطح پر اٹھانے کے لئے ضروری اقدامات اٹھائے۔