احتساب عدالت نے مشتاق رئیسانی کی پلی بارگین کی درخواست اعتراض لگا کر واپس کردی

کوئٹہ (ایجنسیاں+ نوائے وقت رپورٹ) احتساب عدالت کے جج عبدالمجید خان نے مشتاق رئیسانی کی پلی بارگین کی درخواست اعتراض لگا کر واپس کردی، عدالت نے اعتراض عائد کیا کہ بے نامی اکا¶نٹس کا آپس میں ربط نہیں بن رہا‘ عدالت کو ان اکا¶نٹس سے متعلق تفصیل سے آگاہ کیا جائے۔ سابق سیکرٹری خزانہ مشتاق رئیسانی اور انکے سہولت کار کنٹریکٹر سہیل مجید نے پلی بارگین کی درخواست دی تھی۔ بلوچستان میں میگا کرپشن کیس میں شہرت پانے والے سابق سیکریٹری خزانہ مشتاق رئیسانی جن کے گھر پر گذشتہ سال مئی میں نیب حکام نے چھاپہ مارکر ساٹھ کروڑ سے زائد کے کرنسی نوٹ ، پرائز بانڈ زیورات اور دیگر قیمی اشیابرآمد کیں تھیں مشتاق رئیسانی اور ان کے سہولت کار سہیل مجید نے اپنی کرپشن کا اعتراف کرتے ہوئے غیر قانونی طریقے سے بنائے جانے والے اثاثے جن کی مالیت دوارب کے قریب ہے سرکاری خزانے میں جمع کراکے پلی بارگینگ کی درخواست کی تھی۔ واضح رہے کہ بلوچستان میں میگا کرپشن کیس سامنے آنے کے بعد مشیر خزانہ خالد لانگو نے اپنے عہدے سے استعفی دے دیا تھا۔ سابق مشیر خزانہ میر خالد لانگو ، سابق سیکرٹری خزانہ مشتاق رئیسانی اور انکے سہولت کار کنٹریکٹر سہیل مجید کے خلاف احتساب عدالت میں مقدمہ زیر سماعت ہے۔
درخواست/ واپس