پاکستان نے افغانستان کے سرحدی علاقے میں چار سو ستر راکٹ داغے جس کے نتیجے میں بارہ بچوں سمیت چھتیس افراد ہلاک ہوئے۔ کرزئی کا الزام

پاکستان نے افغانستان کے سرحدی علاقے میں چار سو ستر راکٹ داغے جس کے نتیجے میں بارہ بچوں سمیت چھتیس افراد ہلاک ہوئے۔ کرزئی کا الزام

افغان حکام کے مطابق پاکستان کی سکیورٹی فورسز کی جانب سے حملے کنڑ اور ننگرہار صوبے میں کیے گئے جہاں سے نیٹو افواج پہلے ہی نکل چکی ہیں۔ افغان حکام کے مطابق پاکستانی طالبان ان علاقوں میں گھس آئے ہیں۔حامد کرزئی نے یہ معاملہ صدر آصف علی زرداری کے ساتھ تہران میں اٹھایا۔ افغان وزرات دفاع کے ترجمان نے کہا ہے پاکستان کی جانب سے کیے گئے حملوں میں بارہ بچوں سمیت چھتیس افراد ہلاک ہوئے۔ ان کا کہنا تھا کہ افغانستان کی سکیورٹی فورسز شہریوں کی ہلاکتوں کی صورت میں جوابی کارروائی کرنے پر مجبور ہونگی۔