وفاقی کابینہ نےسندھ حکومت کے فیصلوں کی توثیق کردی۔ کراچی میں فوج بلانے کا اختیار وفاق کو نہیں صوبائی حکومت کو ہے۔ فردوس عاشق اعوان

وفاقی کابینہ نےسندھ حکومت کے فیصلوں کی توثیق کردی۔ کراچی میں فوج بلانے کا اختیار وفاق کو نہیں صوبائی حکومت کو ہے۔ فردوس عاشق اعوان

وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ اجلاس میں کراچی کی صورتحال پرسندھ کابینہ کے فیصلوں کی توثیق کی گئی ہے۔ صوبائی حکومت کی سفارش پرکراچی کے نو علاقوں میں رینجرز،پولیس اورحساس ادارے آپریشن کریں گے اوراس دوران گرفتار کیے گئے ملزمان کو میڈیا کے سامنے لایا جائے گا۔ وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ شرپسند عناصرکراچی میں بد امنی پھیلا کرپاکستان کو معاشی طور پر غیر مستحکم کرنا چاہتے ہیں۔ مٹھی بھر دہشتگردوں کو کراچی کو یرغمال بنانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ شہر قائد میں فوج بلانے کا فیصلہ وفاق نہیں صوبائی حکومت کے اختیار میں ہے۔ موجودہ حالات میں فوج کو ہر جگہ اور ہر معاملے میں دھکیلنا درست نہیں۔ رینجرز فوج کا ذیلی ادارہ ہے جس کے ذریعے شہر میں امن وامان قائم کیا جائے گا۔ فردوس عاشق اعوان نے جمعتہ الوداع کو کراچی کے لیے یوم دعا کے طورپر منانے کی بھی اپیل کی۔۔ انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم کی ہدایت پر ریلوے سمیت دیگر پبلک سیکٹرز کی تنظیم نو کے لیے جلد روڈ میپ وفاقی کابینہ کے سامنے پیش کیا جائے گا۔انہوں نے زرعی شعبے کی پیدوار پر تین اعشاریہ پانچ فیصد ٹیکس ختم کرنے اور کسانوں کو مناسب قیمت پرکھاد کی فراہمی یقینی بنانے کا بھی اعلان کیا۔ وفاقی وزیر اطلاعات نے بتایا کہ وفاقی کابینہ توانائی کے بحران کو مستقل بنیادوں پر مانیٹر کررہی ہے اور اس پر قابوپانے کے لیے نندی پور اور چیچوں کی ملیا ںپاور پراجیکٹس شروع کیے گئے ہیں جن سے ایک سے ڈیرھ برس میں ایک ہزار میگاواٹ بجلی سسٹم میں شامل ہوسکے گی۔