مسلم لیگ نون نے ریمنڈ ڈیوس کی رہائی، ڈرون حملوں، پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے اور ٹارگٹ کلنگ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے قومی اسمبلی سے واک آؤٹ کیا

مسلم لیگ نون نے ریمنڈ ڈیوس کی رہائی، ڈرون حملوں، پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے اور ٹارگٹ کلنگ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے قومی اسمبلی سے واک آؤٹ کیا

قومی اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی سپیکرفصل کریم کنڈی کی زیرصدارت ہوا تو صدارتی خطاب پر بحث کے دوران مسلم لیگ نون نے ریمنڈ ڈیوس، ڈرون حملوں، پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھانے جیسے ایشوز پر شدید احتجاج کرتے ہوئے واک آؤٹ کیا اس پر پی پی پی کے رکن اسمبلی نور عالم خان نے کہا کہ مسلم لیگ نون ریمنڈ ڈیوس کی رہائی میں ملوث ہے اور اب واویلا کرکے عوام کی توجہ ہٹانے کی کوشش کر رہی ہے۔ بحث میں حصہ لیتے ہوئے پیپلزپارٹی شیرپاؤ کے سربراہ آفتاب احمد شیرپاؤ نے کہا ہے کہ افغانستان میں طلابان سے مذاکرات ہو سکتے ہیں تو پارلیمنٹ کی ان کیمرہ اجلاس کی قرارداد کی روشنی میں پاکستان میں مذاکرات کیوں نہیں ہوسکتے۔ اس سے پہلے وقفہ سوالات میں قومی اسمبلی کو بتایا گیا کہ اپریل، جون، جولائی، اگست اورستمبر کے مہینوں میں بجلی بچانے کے لئے صدر، وزیر اعظم سمیت تمام اہم شخصیات کے دفاتراوررہائش گاہوں میں اے سی صبح گیارہ بجے چلانے، انہیں چھبیس درجہ پررکھنے اور آرائشی مقاصد کے لیے بجلی استعمال نہ کرنے جیسے اقدامات کیے جارہے ہیں۔ جس سے گیارہ سو میگاواٹ بجلی کی بچت ہوگی۔