جب تک بھارت کشمیر کو متنازعہ علاقہ تسلیم نہیں کرتا اس سے کسی قسم کے مذاکرات نہیں کرنے چاہئیں۔ سابق امیر جماعت اسلامی قاضی حسین احمد

جب تک بھارت کشمیر کو متنازعہ علاقہ تسلیم نہیں کرتا اس سے کسی قسم کے مذاکرات نہیں کرنے چاہئیں۔ سابق امیر جماعت اسلامی قاضی حسین احمد

سابق امیر جماعت اسلامی قاضی حسین احمد نے کہا ہے کہ جب تک بھارت کشمیر کو متنازعہ علاقہ تسلیم نہیں کرتا اس سے کسی قسم کے مذاکرات نہیں کرنے چاہئیں۔ قاضی حسین احمد نے یہ بات لاہورمیں قومی کشمیر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر امیر العظیم، فاروق رحمانی، ابراہیم مغل اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔ قاضی حسین احمد نے کہا کہ بھارت نے کشمیر پر غاصبانہ قبضہ کررکھا ہے۔ وہ خود مسئلہ کشمیرکو اقوام متحدہ میں لیکر گیا اور اب کشمیریوں کو حق خود ارادیت دینے کی بجائے کشمیر کی آزادی کی تحریک کو علحیدگی کی تحریک کا نام دے رہا ہے لیکن دنیا کشمیر سے متعلق پاکستان کے موقف کو صحیح مانتی ہے۔ کشمیریوں کا حق ہے کہ پاکستان کشمیر کی آزادی کی تحریک کی حمائیت کرے اورجب تک بھارت کشمیر کو متنازعہ علاقہ تسلیم نہیں کرتا اس سے کسی قسم کے مذاکرات نہ کیے جائیں۔