حکومت نے سپریم کورٹ کے حکم پر این آئی سی ایل کیس کے لیے مقرر کئے جانے والے تفتیشی افسرایڈیشنل ڈی جی ایف آئی اے ظفر قریشی کو معطل کردیاہے

حکومت نے سپریم کورٹ کے حکم پر این آئی سی ایل کیس کے لیے مقرر کئے جانے والے تفتیشی افسرایڈیشنل ڈی جی ایف آئی اے ظفر قریشی کو معطل کردیاہے

حکومت نے این آئی سی ایل کیس کے تفتیشی افسر ظفر قریشی کو معطل کر دیا ہے، ظفر قریشی کو چند روز قبل سپریم کورٹ کے حکم پر این آئی سی ایل سیکنڈل کی تفتیش کے لئے بحال کیا گیا تھا،اور سپریم کورٹ نے انہیں ڈی جی ایف آئی اے کے عہدے سے ہٹانے پر شدید برہمی کا اظہار کیا تھا ،ذرائع کے مطابق حکومت نے ظفر قریشی کو میڈیا پر بیان دینے کی وضاحت طلب کی تھی اور اس بات کو جواز بناتے ہوئے انہیں معطل کر دیا گیا ،ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ ظفر قریشی کو وزیر اعظم ،رحمان ملک اور پرویز الہٰی کے درمیان ملاقات کے بعد معطل کیا گیا ہے،اس سے قبل سپریم کورٹ کے حکم پر ظفر قریشی کی ایف آئی اے میں تعیناتی کی سمری وزیر اعظم نے اپنے صوابدیدی اختیارات کے تحت مسترد کی تھی، تاہم سپریم کورٹ نے وزیر اعظم کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے انہیں این آئی سی ایل سکینڈل کا دوبارہ تفتیشی افسر مقرر کر دیا لیکن حکومت نے ایک بار پھر ظفر قریشی کو ان کے عہدے سے ہٹادیا ہے۔