قومی اسمبلی اور سینٹ کے اجلاس آج سے شروع ہو رہے ہیں۔ نئے صوبوں کے لئے بنائے گئے متنازع کمیشن سمیت دیگر اہم امور اٹھائے جانے کا امکان ہے۔

قومی اسمبلی اور سینٹ کے اجلاس آج سے شروع ہو رہے ہیں۔ نئے صوبوں کے لئے بنائے گئے متنازع کمیشن سمیت دیگر اہم امور اٹھائے جانے کا امکان ہے۔

قومی اسمبلی کا اجلاس شام پانچ بجے ڈپٹی اسپیکر فیصل کریم کنڈی کی زیر صدارت جبکہ ایوان بالا کا اجلاس چیئرمین نیر بخاری کی زیر صدارت ہوگا۔ دونوں ایوانوں میں معمول کی کارروائی سمیت قانون سازی کی جائے گی۔ قومی اسمبلی میں اقلیتوں کے حقوق سے متعلق بل پیش کیا جائے گا اور سندھ میں اقلیتوں کےمعاملےپربھی بحث ہوگی جبکہ ڈرگ ریگیولیٹری اتھارٹی کا بل بھی پیش کئے جانے کا امکان ہے۔ دونوں ایوانوں میں مسلم لیگ نواز کی جانب سے پنجاب میں نئے صوبوں کے قیام کے لئے بنائے گئے متنازعہ کمیشن کے خلاف احتجاج کیا جائے گا۔ اے این پی سمیت اپوزیشن کی جماعتوں کی جانب سے پیٹرولیم مصنوعات میں اضافے کے خلاف بھی بھرپور آواز اٹھائی جائے گی جبکہ کوئٹہ اور گلگت بلتستان میں مذہبی فرقہ واریت کے نام پر شہریوں کے ہونے والے قتل عام کا معاملہ بھی اٹھائے جانے کا امکان ہے۔ اس کے علاوہ مختلف ارکان کی جانب سے مختلف معاملات پر اعتراضات بھی اٹھائے جائیں گے۔