وفاقی وزیرِ پانی و بجلی راجا پرویز اشرف نے کہا ہے کہ چاروں صوبوں میں اتفاقِ رائے سے ہر وہ ڈیم بننا چاہیے جس سے وفاق کو فائدہ ہو۔

وفاقی وزیرِ پانی و بجلی راجا پرویز اشرف نے کہا ہے کہ چاروں صوبوں میں اتفاقِ رائے سے ہر وہ ڈیم بننا چاہیے جس سے وفاق کو فائدہ ہو۔

لاہور ایئرپورٹ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے راجا پرویز اشرف کا کہنا تھا کہ ڈیمزکی تعمیرکے حوالے سے کوئی بھی فیصلہ متفقہ طور پر کیا جانا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ  گیس سے تیل پر منتقل کرنے کی وجہ سے بجلی مہنگی ہوئی ہے، شارٹ فال پر چند مہینوں میں قابو پالیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ پیپکو کو تحلیل کرنے کا فیصلہ کافی عرصے پہلے کرلیا گیا تھا، عمل درآمد اب کیا گیا ہے۔ بعد ازاں واپڈا ہاؤس میں گفتگو کرتے ہوئے راجہ پرویز اشرف کا کہنا تھا کہ پیپکو کی تحلیل کے بعد پاور کمپنیوں کو مالی خود مختاری دے دی جائے گی، اداروں کی کارگردگی بہتر بنانے کے لیے حکومت انکی تنظیم نو کر رہی ہے، انہوں نے کہا کہ پیپکو کی تحلیل سے ملازمین کو کوئی نقصان نہیں پہنچے گا، ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ بجلی کی قیمت میں مجبوراً اضافہ کیا گیا ہے کیونکہ بجلی کی پیداوار اور فروخت کے حوالے سے سالانہ اڑھائی سو ارب روپے کا خسارہ برداشت کرنا پڑرہا ہے۔