فرانس میں جشن آزادی پر پاکستانی کمیونٹی مزید تقسیم

فرانس میں بسنے والے تارکینِ وطن اپنی سیاسی، سماجی اور مذہبی سرگرمیوں کے حوالے سے یورپ بھر میں بسنے والے تارکینِ وطن کیلئے ایک مثال رہے ہیں۔ پاکستان اتحاد کا قیام ہو یا تمام ایسوسی ایشنز کی ایک فیڈریشن کا قیام، فرانس ہمیشہ سرفہرست رہا۔ فرانس کی دیکھادیکھی یورپ بھر کے پاکستانیوں نے کمیونٹی کے اتحاد، مشترکہ پلیٹ فارم اور فیڈریشنوں کے قیام کیلئے انتھک محنت کی اور ان مشترکہ پلیٹ فارموں سے پاکستانی کمیونٹی کے مسائل کے حل کیلئے عملی اقدامات کئے۔ اپنے پاکستانی بھائیوں کو اتحاد کا راستہ دکھانے والی فرانس میں بسنے والی پاکستانی کمیونٹی آج باہمی خوشگوار تعلقات کے باوجود اس سال مشترکہ پلیٹ فارم سے یومِ آزادی پاکستان کا تہوار نہ منا سکی۔ ہر جماعت نے اپنے پلیٹ فارم سے پروگرام کا انعقاد کیا اور دوسری تمام جماعتوں کو اس میں شرکت کی دعوت دی لیکن مشترکہ پروگرام کا نہ ہونا یومِ آزادی کی خوشیوں کو گہنا گیا۔
سفارتخانہ پاکستان میں روایتی تقریب کا انعقاد ہوا جس میں ناظم الامور رفیع الزماں صدیقی نے قومی ترانے کی دھن پر پرچم کشائی کی۔ مسلح افواج کے نمائندوں نے سلامی دی۔ تقریب میں کمیونٹی کے نمائندوں کے علاوہ خواتین اور بچوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ بزرگ سماجی شخصیت راجہ کرامت نے تمام حاضرین میں پاکستانی پرچم تقسیم کئے۔
یومِ آزادی کی سب سے بڑی تقریب پاکستان فرانس پوٹھوہار ایسوسی ایشن کے پلیٹ فارم سے ہوئی۔ اس علاقائی جماعت کے پروگرام کے مہمان خصوصی ضلع ناظم راولپنڈی راجہ جاوید اخلاص اور سفارتخانہ پاکستان کے ناظم الامور رفیع الزماں صدیقی تھے۔ راجہ جاوید اخلاص نے اپنے خطاب میں حاضرین کو اتحاد کا سبق دیا اور محنت سے پاکستان کا بیرن ملک نام روشن کرنے کی تلقین کی۔ تقریب سے راجہ جاوید اخلاص کے علاوہ ناظم الامور رفیع الزماں صدیقی، صدر ایسوسی ایشن منور حسین، وائس چیئرمین راجہ علی اصغر اور راجہ ظہیر نے خطاب کیا۔
14اگست کے حوالے سے تیسری بڑی تقریب مقامی ریسٹورنٹ میں مسلم لیگ ن نے منعقد کی۔ اس تقریب کی خوبصورتی یہ تھی کہ پیرس کی تقریباً تمام سیاسی و مذہبی جماعتوں کے نمائندوں نے شرکت کی اور تحریک پاکستان، قیامِ پاکستان اور دوقومی نظریہ پر سیرحاصل خطابات کئے۔ پاکستان مسلم لیگ ن فرانس کی طرف سے جشن آزادی کے سلسلے میں ہونیوالی شاندار تقریب میں صدر اختر علی بٹ، سیکرٹری جنرل محمد یوسف خان، قائد لیگ کے صدر چودھری شاہین اختر، پاکستان پریس کلب کے صدر صاحبزادہ عتیق الرحمن، پی پی پی فیڈرل کونسل یورپ کے کوآرڈینیٹر چودھری اشرف گوندل، عوامی تحریک کے صدر طارق چودھری، مسلم لیگ ن کے ایڈیشنل سیکرٹری جنرل منظور حسین جنجوعہ، انجمن فلاح دارین کے سربراہ شیخ غلام حسین، حلقہ احباب کے سینئر رہنما میاں محمد امجد، منہاج القرآن مصالحتی کونسل ناروے کے ڈائریکٹر اعجاز احمد وڑائچ ، پی پی پی کے نائب صدر ملک منیر احمد، ن لیگ کے سیکرٹری اطلاعات آفتاب گھلو نے خطاب کیا۔
تقریب کے آخر میں جشن آزادی کیک کاٹا گیا اور پاکستان کی ترقی، امن و امان اور سلامتی کے حوالے سے خصوصی دعا کی گئی۔
منڈیروالی بال کلب کی طرف سے اس سال بھی جشنِ آزادی والی بال کپ ٹورنامنٹ کا انعقاد کیا گیا جس میں یورپ بھر سے پاکستانیوں کی ٹیموں نے بھرپور حصہ لیا۔ دو دن جاری رہنے والے اس ٹورنامنٹ میں ٹیموں نے حاضرین کو اپنے بھرپور کھیل سے محظوظ کیا۔ فائنل میچ کے آخری راؤنڈ میں ہونیوالی بدنظمی کی وجہ سے ٹورنامنٹ کے آرگنائزر چودھری اللہ دتہ منڈیر نے ٹورنامنٹ کے خاتمے کا اعلان کر دیا۔ اس ٹورنامنٹ کو دیکھنے کیلئے سیننکڑوں کی تعداد میں پاکستانی دورو نزدیک سے تشریف لائے۔
شام کو ادارۂ منہاج القرآن فرانس میں پاکستان عوامی تحریک کی طرف سے استحکامِ پاکستان کے نام سے ایک شاندار تقریب کا اہتمام کیا گیا۔ اس تقریب میں خواتین اور بچوں کی ایک کثیر تعداد نے شرکت کی۔ بچوں نے جشنِ آزادی کے حوالے سے ملی نغمے گائے اور کوئز پروگرام میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ پروگرام کے مہمان خصوصی امیر یورپین کونسل منہاج القرآن علامہ حسن میر قادری نے پرمغز خطاب کیا اور منہاج مصالحتی کونسل ناروے کے اعجاز احمد وڑائچ کے ساتھ مشترکہ بریفنگ میں ناروے میں منہاج مصالحتی کونسل کی طرف سے کئے گئے اقدامات اور ان کے نتائج کے حوالے سے شرکاء کو آگاہ کیا۔
یومِ آزادی کے حوالے سے ایک بڑی تقریب کا انعقاد پاکستان مسلم لیگ ق نے پیرس کے نواحی علاقے پاویو صوبوآ کے ایک پاکستانی ریسٹورنٹ میں کیا۔ اس تقریب کے مہمان خصوصی بھی ضلع ناظم راولپنڈی راجہ جاوید اخلاص تھے۔ مسلم لیگ ق کے صدر چودھری شاہین اختر کی خصوصی دعوت پر پریس قونصلر سفارتخانہ پاکستان مسعود انور نے تقریب میں خصوصی طور پر شرکت کی۔ اس شاندار تقریب کی نظامت کے فرائض جنرل سیکرٹری ق لیگ راجہ عابد حسین ایڈووکیٹ نے ادا کئے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے اتحاد کی اہمیت، پاکستانیت کے فروغ،بیرونِ ملک پاکستان کے بہتر امیج کیلئے اپنی توانائیوں کو بروئے کار لانے کی ضرورت پر زور دیا۔ مہمان خصوصی راجہ جاوید اخلاص نے اپنے خطاب میں بیرون ملک پاکستانیوں کی جدوجہد، محنت اور پاکستان کیلئے محبت کو سراہا اور ان پر زور دیا کہ آپس میں اتحاد اور بھائی چارے کو فروغ دیں۔ انہوں نے بیرون ملک پاکستانیوں کو پاکستان کیلئے سفیر قرار دیا۔ انہوں نے ضلع راولپنڈی میں کئے گئے ترقیاتی کاموں کا خصوصی ذکر کیا۔ تقریب کے آخر میں دعائے خیر کی گئی۔
یومِ آزادی کے حوالے سے تمام پروگرام بخیروخوبی اپنے اختتام کو پہنچے لیکن پاکستانی کمیونٹی کے حلقوں میں یہ کسک ضرور محسوس ہو رہی ہے کہ کسی مشترکہ پلیٹ فارم سے یہ پروگرام کیوں نہیں ہوا۔ مختلف جماعتوں کے عہدیداروں سے گفت و شنید سے یہ عقدہ کھلا کہ اس سال اتحاد کا پروگرام صرف اس لئے سبوتاژ کیا گیا کہ اسی سال وجود میں آنے والی ایک علاقائی جماعت پوٹھوہار ایسوسی ایشنز کا پروگرام کامیاب کرایا جائے۔ مسلم لیگ ن فرانس کے ایک سینئر عہدیداروں نے جوکہ پوٹھوہار ایسوسی ایشن کے بانی ارکان میں سے ہیں، نے مسلم لیگ ن کی ایگزیکٹو میٹنگ میں بصداصرار مطالبہ کیا کہ اس سال ن لیگ کسی اتحاد میں شامل نہ ہو گی اور اپنا پروگرام اکیلے ہی کرے گی۔ پھر انہی عہدیداروں نے مسلم لیگ ق کے عہدیداروں کو جو اس علاقائی جماعت میں شامل ہیں، کو استعمال کرتے ہوئے مسلم لیگ ق کو بھی علیحدہ پروگرام کرنے پر مجبور کر دیا۔ گذشتہ چھ برسوں میں فرانس میں پاکستانی کمیونٹی دو گروپوں میں تقسیم رہی ہے لیکن دونوں گروپ اپنے اپنے مشترکہ پلیٹ فارموں سے جشنِ آزادی کا پروگرام ترتیب دیتے رہے ہیں۔ اس بار کمیونٹی کے چند مخلص لوگوں کی کوششوں سے تمام جماعتوں کے آپس میں باہمی رابطے اور تعلق پھر سے جُڑ گئے تھے لیکن کچھ لوگوں کے سٹیج پر بیٹھنے کے شوق اور ایک علاقائی جماعت کا پروگرام کامیاب کرانے کی ضد نے کمیونٹی کو تقسیم در تقسیم کر دیا۔ انہی پروگراموں میں علاقائی جماعت کے بعد اب کچھ لوگ لسانی جماعت بنانے کے بارے میں بھی غور کرنے لگے ہیں۔ ہمارے کچھ گجر بھائی اس نام سے ایک جماعت بنانے کے چکر میں ہیں جس سے محسوس ہوتا ہے کہ فرانس میں پاکستانی کمیونٹی مزید تقسیم ہو جائیگی۔
یومِ آزادی کے حوالے سے سب سے اہم بات یہ تھی کہ حکومتی پارٹی پی پی پی نے نہ تو کوئی تقریب منعقد کی اور نہ ہی کسی بھی جماعت کی دعوت پرجشنِ آزادی کے کسی بھی پروگرام میں شرکت کی بلکہ سفارتخانہ پاکستان کی پرچم کشائی کی تقریب میں بھی PPP کے عہدیداروں کی غیرحاضری کو نوٹ کیا گیا۔ سیاسی حلقوں کا کہنا ہے کہ جس طرح حکمرانوں کیلئے پاکستان اور پاکستان کے دن غیرضروری ہیںاسی طرح کے عہدیداروں کیلئے بھی یہ دن کسی خصوصیت کا حامل نہیں ہے اور ویسے بھی PPP فرانس کے تمام عہدیدار اپنے صدر کے تابع ہیں اور ان کے صدر ارشاد احمد کمبوہ ہیں جوکہ پاکستان کچھ خصوصی ٹاسک پورے کرنے گئے ہوئے ہیں۔ جب وہ واپس آئیں گے تو PPP قومی دن بھی منا لے گی۔