لندن میں گورنر پنجاب کی تقریب

لندن میں گورنر پنجاب کی تقریب

گورنر جناب محمد سرور چودھری نے ورلڈ کانگریس آف اوورسیز  پاکستانیز کے چیئرمین سید قمر رضا کی طرف سے دئیے گئے ایک  بڑے عشائیہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ان کی خواہش ہے کہ پاکستان دنیا کے بڑے ممالک کی صف میں کھڑا ہو اور اسے ایک ترقی یافتہ ملک بنایا جائے پاکستان اس وقت مضبوط  ہاتھوں میں  ہے میاں برادران پاکستان  اور پاکستانیوں کے لئے کچھ کر گزرنے کی سوچ میں  ہیں وہ دن دور نہیں جب پاکستان ایشیاء کا ٹائیگر بن کر ابھرے گا۔ انہوں نے کہا کہ مجھے  پہلا مسلمان ممبر آف برٹس پارلیمنٹ بننے کا اعزاز حاصل ہے۔ یہاں رہ کر  انہوں نے پاکستان کی ترقی کے لئے کاوشیں کیں برطانیہ کی نیشنلسٹی کوختم کرنا ایک مشکل مرحلہ تھا۔  لیکن  ملک و قوم کی خاطر قربانی دی کیونکہ میرے نزدیک زندگی ایک تحفہ  ہے اور  کب ختم ہو جائے  اس اندازہ نہیں اس لئے میں پاکستان اور باالخصوص گورنر پنجاب کی حیثیت سے میاں برادران کے تعاون سے  اہم اقدامات کریں گے جس سے پاکستانی عوام خوشحال ہوں گے۔ پاکستان میں سرمایہ کاری کی ضرورت ہے وہ یورپین یونین میں تمام پارٹیوں کے ساتھ رابطے  میں ہیں  تاکہ پاکستان کو جی ایس پی پلس کی سہولت دستیاب ہو پاکستانی مصنوعات  کی تجارت میں  اضافہ ہو۔ پاکستان بیرونی دنیا کے ساتھ تجارت کو فروغ  دے گا۔ قبل ازیں  مہران برٹس پارلیمنٹ نے  بھی خطاب کیا اور سرور چودھری کی خدمات  کی تعریف کی۔ محمد سرور چودھری نے سید قمر رضا اور ان کی پوری ٹیم کو سراہا جنہوں نے انتہائی منظم انداز میں عشائیے کا  اہتمام کیا بعد ازاں فرانس کی نامور کاروباری سماجی شخصیت  ناصر عباس تارڑ نے گورنر پنجاب سے خصوصی ملاقات کرتے ہوئے انہیں منڈی بہائو الدین کے عوام کے مسائل اور وہاں ان کی طرف سے جاری فلاح و بہبود کے کاموں نے  تفصیلات سے آگاہ کیا گورنر پنجاب نے ان کی خدمات کو  سراہتے ہوئے کہا کہ انسانیت اور فلاح بہبود  کے کاموں میں  وہ بڑی دلچسپی لیتے ہیںاور اس کے لئے وہ ہر جگہ جانے کو تیار ہیں  حتٰی کہ وہ منڈی بہائوالدین بھی جا کر ان کا منصوبہ دیکھیں گے  تاکہ اسے پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے  گورنر  نے انہیں اپنی طرف  سے مکمل تعاون کا یقین دلایا گورنر نے  اس موقع پر اخوت تنظیم کا  بھی ذکر کیا اور کہا کہ پاکستان میں ایسی تنظیموں  نے بڑی مہارت سے کام کئے جو قابل قدر و قابل حوصلہ  ہے ناصر تارڑ نے گورنر  کو بتایا کہ وہ اخوت  کے ایک ادنیٰ کارکن بھی ہے جسے گورنر پنجاب  نے سراہا اور یقین دلایا کہ  وہ پاکستان کی ترقی اور فلاح و بہبود کے کاموں میں کسی سے پیچھے نہ ہٹیں گے بلکہ قدم سے قدم ملائیں گے گورنر پنجاب نے ہال میں بیٹھے افراد سے فرداً فرداً سلام بھی لیا اور مل کر ان کے پاس گئے  جسے ہال میں موجود سینکڑوں  افراد نے کافی سراہا اور تالیاں بجا کر انہیںداد  بھی دی۔ گورنر پنجاب   نے اس موقع پر کہا کہ انہوں نے گورنر  ہائوس کو غرباء کے لئے کھول دیا ہے وہ چاہتے  ہیں کہ غربا  کے ساتھ ایک مضبوط رشتہ قائم ہو۔  تقریب کے اختتام پر گورنر کے  قریبی دوست اور تقریب کے منتظم سید قمر رضا شاہ   نے تمام حاضرین  کا شکریہ ادا کیا جو ان کی دعوت پر تقریب  میں شریک  ہوئے یاد رہے  کہ سید قمر رضا لندن کی وہ واحد شخصیت ہیں جنہوں نے پاکستان  اور کمیونٹی کے بے گراں قدر خدمات سرانجام دیں سیاست مفادات  سے بالا تر ہو کر ملک وقوم کے لئے جدوجہد کی 4 گھنٹے پر مشتمل  دورانیے کی تقریب میں سید قمر رضا مہمانوں کا استقبال  کرتے رہے اور انہیں ان کی سیٹوں تک پہنچاتے رہے  لیکن خود نہ بیٹھے جس پر تقریب  کے شرکاء نے ان کے اس مخلصانہ روئیے پر انہیں مبارکباد بھی دیں  اور  خراج تحسین  بھی پیش کیا۔ جبکہ فرانس  سے آئے ہوئے مہمان ناصر عباس تارڑ سپائس ویلجکے ڈائریکٹر راجہ  سلیمان  مون اور عامر  ملک اور حاجی ارشاد  ٹوٹنگ والے نے سیدقمر رضا کو کامیاب پروگرام کرانے پرزبردست  مبارکباد دی اور حکومت پاکستان سے اپیل کی کہ وہ سید قمر رضا جیسی محبت وطن شخصیت کو اوورسیزپاکستانیوں کا مشیر مقرر کرے جس سے  اوورسیز پاکستانیوں کی حوصلہ افزائی ہو گی۔