یوم الوطنی

قیوم واثق ...............
یہیں پہ آیا ہمیں زیست کا قرینہ میاں
کہ ہے سعودی عرب آگہی کا زینہ میاں
یہ وقت ایک سمندر ہے، اس سمندر میں
مزے سے تیرتا جاتا ہے یہ سفینہ میاں
بلاد مشرق و مغرب کے کتنے دیکھ لئے
سکون و امن کا پایا یہیں خزینہ میاں
اب اس سے بڑھ کے بھی تعریف اور کیا ہوگی
تمام ملکوں میں یہ ملک ہے نگینہ میاں
ہے فضل خاص خدا کا اور اس کی رحمت ہے
کہ آسمانی مذاہب کا ہے یہ سینہ میاں
سزا کا خوف ہے اتنا یہاں کہ دیکھا نہیں
نکالتے ہوئے لوگوں کو بغض و کینہ میاں
یہ سرزمیں ہے مقدس بہت ہمیں واثق
یہیں پہ مکہ ہے اپنا یہیں مدینہ میاں
(PRC کی تقریب میں پڑھی گئی)