سحر اور افطار کا منظر

سحر اور افطار کا منظر

یوں تو ماشا ء اللہ  مکہ مکرمۃ حرم شریف میں اور مدینہ منورہ مسجد نبویؐ  شریف میں پورا سال رونق رہتی ہے، مگر جونہی  رمضان  المبارک کا بابرکت مہینہ شروع ہوتا ہے۔ ان دونوں مکافات  میں رونقیں اور روح پرور مناظر دیکھنے کو ملتے ہیں  خاص کر افطار کے وقت فرزندان اسلام  لاکھوں کا زائرین  کو روزہ افطار کرانے کا منظر دیدنی ہوتا ہے  حرم شریف میں  رمضان المبارک  میں  بہت بڑا دستر خوان لگایا جاتا ہے  لیکن اب حرم شریف میں توسیع کے کام  کے سبب صحن کا  کافی حصہ مصروف  ہے۔  اس لئے نوائے وقت سروے  رپورٹ یعنی  راقم الخروف  نے جو معلومات  لی ہے۔ اس کے مطابق مدینہ منورہ بھی مسجد نبویؐ  کے اندر ایک ستون  سے دوسرے  ستوں کے درمیان کا فاصلہ تقریباً چار کلومیٹر کا ہے۔ اس طرح مسجد نبویؐ  کے اندر چار میٹر کے تقریباً تین ہزار دستر خوان لائے جاتے ہیں۔ جس میں خادم حرمین شریفین کی جانب سے خیراتی اداروں کی جانب سے  اور اس  کے علاوہ انفرادی طور پر  بھی دستر خوان سجائے جاتے ہیں ، اس  طرح مسجد نبویؐ کے اندر چار  میٹر کے دستر خوانوں  کی تعداد تین سے ساڑھے تین ہزار تک ہوتی ہے۔ اگر تین ہزار دستر خوانوں کا حساب کریں تو اس کا  فاصلہ بارہ کلومیٹر بنتا  ہے۔ اس طرح مسجد نبویؐ  کے صحن میں تیس میٹر کے تقریباً چار ہزار دستر خوان لگائے جاتے  ہیں جس کا فاصلہ ایک سو بیس کلومیٹر بنتا ہے۔ اس طرح ٹوٹل ایک سو بتیس  کلومیٹر شمار ہو گا  اس کو ہم دنیا کا سب سے  بڑا دستر خوان شمار  کریں گے تیس میٹر کے دستر خوان  پر تقریباً پچیس سو سے دس ہزار  ریال خرچ ہوتے ہیں۔ دستر خوان پر کھجور‘ لسی‘ جوس‘ آب زم زم  عربی قہوہ سادہ چائے۔  سوپ چاول مرغی‘ ڈبل روٹی ‘ فروٹس اور مقامی مٹھائیاں وغیرہ شامل ہوتی ہیں ، حیران کن بات یہ ہے کہ ایک سو بتیس کلومیٹر کا طویل دستر خوان صفائی  کی ڈیوٹی پر مامور  نوجوان تین سے پانچ منٹ کے اندر سمیٹتے ہوئے صفائی کر لیتے ہیں۔  کیونکہ پھر اسی جگہ پر با جماعت نماز ادا کی جاتی ہے۔  ایک رپورٹ کے مطابق حرم شریف   میں سوسائٹی کی جانب سے چار سے پانچ لاکھ لوگوں کو روزانہ  سحری و افطاری   کرائی جاتی ہے اور  مسجد نبویؐ  میں تین ساڑھے تین لاکھ روزہ داروں کو افطار و سحر کرایا جاتا ہے یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے بلکہ قابل فخر ہے کہ  مسجد نبویؐ  میں موجودہ وزیراعظم پاکستان محمد نوازشریف کی جانب سے ہر سال آخری عشرہ میں  دستر خوان لگایا جاتا ہے اس کے علاوہ دیگر پاکستانی  جو بالخصوص پاکستانی سے تشریف لاتے ہیں اور بعض جو یہاں پر مقیم ہیں وہ بھی ہمیشہ ہر سال یہاں دستر خوان  سجاتے ہیں  اور نیکیاں سمیٹتے ہیں ہم کسی اور مقام پر جب ایک نیکی یا عبادت  کریں تو اس کی جگہ دس نیکیوں  کا ثواب ملتا ہے۔  لیکن بزرگوں   کے مطابق جب ہم  مسجد نبویؐ  میں کوئی نیکی  خدمت خلق یا نماز نفل سنت ادا  کریں تو اس کا ثواب 50 ہزار لکھا جاتا ہے اسی طرح حرم شریف  کی حدود میں ایک  نیکی کے بدلے ایک لاکھ نیکی کا ثواب ملتا ہے گویا جس شخص نے  مدینہ  منورہ   میں اگر  ایک روزہ دار کا روزہ افطار کرایا  تو اس نے پچاس ہزار افراد کا روزہ افطار کرایا۔ اسی طرح حرم شریف  میں ایک روزہ دار کا روزہ افطار کرانے کا مطلب ایک لاکھ  روزہ دار  کا روزہ افطار کرانا  ہے  سب سے بڑی  بات  یہ کہ جس نے عبادت  کی اسے جنت ملے گی۔ مگر جس نے انسانیت کی خدمت  کی ا سے خود خداوند کریم ملیں گے اور روز قیامت  جسے خدا مل جائے اسے اور کیا چاہئے۔  سبحان اللہ‘  یہ بات قابل ذکر ہے کہ مدینہ منورہ  میں مقیم خاص کر سعودی اتنے خوش اخلاق و ملنسار  جب ان سے ملیں تو جیسے دل کو ٹھنڈک محسوس ہوتی ہے مکہ مکرمہ کے لوگوں  کا ایک اپنا مقام ہے۔ مگر سبحان اللہ  کیا بات ہے مدینہ والوں کی خلق و ملنساری  محبت  و عاجزی تو کوئی ان سے سیکھے۔ افطار   کے وقت جن لوگوں نے دستر خوان لگائے ہوئے ہوتے ہیں۔ مسجد نبویؐ میں داخل ہونے والے ہر شخص کو دور سے مصافحہ  کر کے بڑی عاجزی، پیار و محبت سے منت سماجت کر کے اپنے  لگائے ہوئے دستر خوان تک لے آتے ہیں وہاں دستر خوان لگانے والے  ہر شخص کی یہی کوششیں ہوتی ہے کہ زیادہ  سے زیادہ زائرین اس کے مہمان ہوں مسجد نبویؐ  میں پندرہ سال سے مسسل دستر خوان لگانے والے  طلال الاحمدی نے بتایا کہ مجھے پورا سال اسی ماہ کا انتظار  رہتا ہے۔ کیونکہ جو مزہ مسجد نبویؐ میں آئے ہوئے مہمانوں کو روزہ افطار کرانے میں آتا  ہے  وہ کہیں اور نہیں۔ عبدالعزیز نے بتایا کہ  مسجد  مسجد نبویؐ میں افطاری کا دستر خوان لگاتا ہوں تقریباً پندرہ سال سے لگا رہا ہوں۔ جس  میں میرے اور دوست بھی شامل   ہوتے ہیں اسی طرح پاکستانی شہری  حاجی محمد نواز  جن کا تعلق شیخوپورہ  پاکستان  سے ہے۔ سابق ایم پی اے بھی رہ چکے ہیں کئی برسوں سے یہاں پر دستر خوان سجا رہے ہیں ان کے ایک ساتھی نے بتایا کہ حاجی صاحب رمضان المبارک  کا آخری عشرہ یہاں گزارتے  ہیں اور ہمیشہ دستر خوان لگاتے ہیں دعا  ہے کہ اللہ  پاک  ان تمام لوگوں کے رزق و مال میں برکت عطا فرمائے۔  (آمین ثم آمین)