بیلجیئم: یوم یکحہتمی کشمیر پر کشمیریوں اور پاکستانیوں کا پارلیمینٹ کے سامنے مشعل بردار جلوس

برسلز (نامہ نگار) بیلجیئم میں مقیم کشمیریوں اور پاکستانیوں نے پارلیمینٹ کے سامنے ایک مشعل بردار جلوس نکالا جس کا مقصد پاکستان کی طرف سے یوم یکجہتی کشمیر منانے پر اس کا شکریہ اداکرنا اور عالمی برادری پر مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کیلئے زور دینا تھا۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق ریلی کی قیادت کشمیر سینٹر برسلز کے چیئرمین بیرسٹر عبدالمجید ترمبو نے کی ہے۔اس موقع پر بیرسٹر عبدالمجید ترمبو نے کہا کہ یوم یکجہتی کشمیر منانے پر کشمیری عوام پاکستانی حکومت اور عوام کے شکرگزار ہیں کہ انہوںنے ہمیشہ مظلوم کشمیریوں کی حق خود ارادیت کیلئے سفارتی، اخلاقی اور سیاسی مدد جاری رکھا ہے ۔ انہوںنے کہا کہ بھارت خاموش ڈپلومیسی کا ڈرامہ رچا رہا ہے تاہم کشمیری حق خود ارادیت کے حصول تک چین سے نہیں بیٹھیں گے اور انہوںنے اس حق کیلئے بے پناہ قربانیاں دی ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کے سلسلے میں دو طرفہ مذاکرات بے فائدہ ہیں اور اس مسئلے کے پائیدار حل کیلئے سہ فریقی مذاکرات کا انعقاد ہونا چاہئے جس میں پاکستان، بھارت اور کشمیریوں کے حقیقی نمائندے شامل ہوں۔انہوںنے کہا کہ کشمیری اپنے پیدائشی حق کے لئے پر امن جدوجہد کررہے ہیں لیکن بھارتی فوجی انہیں اس کا جواب گولیوں ، ڈنڈوں اور آنسو گیس کی شیلنگ سے دے رہے ہیں۔انہوںنے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں کی ریاستی دہشت گردی روز بروز بڑھ رہی ہے اور فوجی نوجوانوں کے ساتھ ساتھ بچوں اور خواتین کو بھی ظلم کا نشانہ بنا رہے ہیں۔ریلی کے اختتام پر بیلجیم کے وزیر اعظم کے نام ایک یادداشت پیش کی گئی جس میں ان سے اپیل کی گئی کہ وہ بھارت پر دباﺅ ڈالیں کہ وہ کشمیریوں کو ان کا جائز حق دے۔ مظاہرین نے اس موقع پر کشمیریوں کی آزادی اور بھارتی ریاستی دہشت گردی کے خلاف نعرے لگائے۔