گرینی میں عرب فیشن شو

گرینی میں عرب فیشن شو

پیرس کے نواحی علاقے گرینی میں عرب فیشن شو کا انعقاد کیا گیا اس شو کا اہتمام (Royaltesse events)رائیلٹیس ایسوسی ایشن آف آرٹ نے کیا۔ فیشن شو میں عرب دُولہا و دُلہن کے روایتی ملبوسات کو نئی جدت کے ساتھ پیش کیا گیا۔ فرانس بھر سے عرب ملبوس کفتان تخلیق کرنے والی ڈیڑھ درجن فیشن ڈیزائنر نے اپنے تخلیق کئے گئے خوبصورت ملبوسات متعارف کرائے۔ اس فیشن شو میں خصوصی طور پر پاکستانی دُولہا اور دُ لہن کے ملبوسات کی بھی نمائش کی گئی جسے حاضرین نے بے حد سراہا۔
روایتی اور جدید ملبوسات میں کیٹ واک کرتی 60 کے لگ بھگ ماڈلز نے اس فیشن شو کو چار چاند لگا دئیے۔ Royaltesse ایسوسی ایشن کے موسیو عبدل‘ مادام سمیرہ اور مادام شاوا کا کہنا تھا کہ اس اینٹ کا مقصد اپنی روایات اور کلچر کو زندہ رکھنا اور خوبصورت اور جدید ملبوسات تخلیق کرنے والے فیشن ڈیزائنر کو متعارف کرانا ہے اور ہم اس پروگرام کی کامیابی پر بہت خوش ہیں۔ فیشن شو میں عرب گلوکاروں مخصوص عرب گانوں سے حاضرین کو محظوظ کرتے رہے۔
پیرس میں والی بال ٹورنامنٹ
پہلی اور دوسری پوزیشن حاصل کرنے والی ٹیموں میں کپ اور نقد انعامات تقسیم کئے گئے
ٹورنامنٹ میں برطانیہ‘ جرمنی‘ ہالینڈ‘ بیلجیئم اٹلی‘ سپین‘ ناروے‘ ڈنمارک اور فرانس کی 16 ٹیموں نے حصہ لیا
یورپ بھر سے ہزاروں شائقین اس والی بال ٹورنامنٹ کو دیکھنے کیلئے فرانس آئے
صحت مندانہ سرگرمیوں کے لئے ہر قسم کا تعاون کیا جائے گا۔سفیرپاکستان غالب اقبال
پیرس میں دو روزہ یورپی والی بال ٹورنامنٹ کا آغاز ہو ا افتتاحی میچ کا باقاعدہ آغاز فرانس میں پاکستان کے سفیر غالب اقبال اور فرانس کی نیشنل اسمبلی کے ممبر فرانسوا پیپونی نے کیا‘ جس میں برطانیہ‘ جرمنی‘ ہالینڈ‘ بیلجیئم‘ ناروے‘ ڈنمارک اور فرانس کی 16 ٹیموں نے حصہ لیا‘ سفیر پاکستان نے کہا کہ سفارت خانہ پیرس سفارتی ذمہ داریوں کے ساتھ ساتھ کھیلوں کے میدان میں بھی آپ کے شانہ بشانہ ہے‘ آپ بھی فرانس کے قانون کی پابندی کریں۔ آپ پاکستان اور فرانس کی ترقی میں اپنا کردار ادا کریں۔ سفیر پاکستان غالب اقبال نے یورپی والی بال ٹورنامنٹ کی ونر ٹیم کو سفارت خانہ پیرس کی طرف سے ایک ہزار یورو نقد انعام دینے کا اعلان بھی کیا۔ افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ممبر نیشنل اسمبلی فرانسوا پیپونی نے کہا کہ آپ فرانس میں پاکستان کے سفیر ہیں۔ سفارت خانہ پیرس میں تعینات نئے سفیر سے مل کر پاک فرانس دوستی کو مضبوط بنائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ فرانس کا تعاون ہمیشہ کے لئے ہے۔ ہم پاکستان کے ساتھ اپنے تعلقات کو مضبوط اور مستحکم کریں گے۔ فرانس کی نیشنل اسمبلی کے ممبر فرانسوا پیپونی اور سفیر غالب اقبال نے افتتاحی میچ بھی دیکھا اور آرگنائزر چودھری نوید کمالہ‘ میاں ساجد‘ محمد یوسف خان‘ چودھری شاہد فاروق لنگڑیال چودھری فضل الٰہی‘ چودھری جاوید کمالہ‘ محمد الیاس موسی کمالہ‘ چودھری نواز اور چودھری عبدالرزاق آف ڈھل بنگش کا شکریہ ادا کیا۔
فرانکو پاک ایسوسی ایشن کے زیراہتمام پیرس میں سہ روزہ یورپی والی بال ٹورنامنٹ میں پہلی اور دوسری پوزیشن حاصل کرنے والی ٹیموں میں کپ اور نقد انعامات تقسیم کئے گئے مہمان خصوصی سارسل کے میئر و رکن قومی اسمبلی فرانسوا پیپونی تھے۔ پوزیشن حاصل کرنے والی ٹیموں میں فرانسوا پیپونی نے انعامات تقسیم کئے اور آرگنائزر چودھری نوید کمالہ‘ میاں ساجد‘ محمد یوسف خان‘ چودھری شاہد فاروق لنگڑیال‘ اختر علی بٹ‘ چودھری جاوید کمالہ‘ محمد الیاس موسی کمالہ‘ چودھری نواز‘ چودھری سجاد علی‘ چودھری محمد رفیق اور چودھری عبدالرزاق آف ڈھل بنگش نے انعامات تقسیم کئے۔ ٹورنامنٹ میں برطانیہ‘ جرمنی‘ ہالینڈ‘ بیلجیئم اٹلی‘ سپین‘ ناروے‘ ڈنمارک اور فرانس کی 16 ٹیموں نے حصہ لیا۔ یورپ بھر سے ہزاروں شائقین اس والی بال ٹورنامنٹ کو دیکھنے کیلئے فرانس آئے۔ اس موقع پر چودھری اورنگ زیب اور والی بال کمیٹی کے ہمراہ رکن قومی اسمبلی فرانسوا پیپونی نے اچھے کھیل اور ونر ٹیم کے کھلاڑیوں میں کپ اور نقد انعامات کئے۔ فرانسوا پیپونی نے وقت نیوز کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سہ روزہ والی بال ٹورنامنٹ بڑا خوش آئند رہا جس کی حوصلہ افزائی کیلئے سفیر پاکستان غالب اقبال نے خود بھی ہال میں آئے اور آرگنائزر کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ صحت مندانہ سرگرمیوں کے لئے ہر قسم کا تعاون کیا جائے گا۔ فرنچ رکن قومی اسمبلی فرانسوا پیپونی نے وقت نیوز کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سہ روزہ والی بال ٹورنامنٹ بڑا خوش آئند رہا اور بہت خوبصورت کھیل دیکھنے کو ملا۔ پاکستانی کمیونٹی کے ہزاروں تماشائیوں نے نہایت جوش و خروش اور سے تمام میچ دیکھے اور کھلاڑیوں کی بھرپور حوصلہ افزائی کی۔
فرانسوا پیپونی نے بتایا کہ اگست میں پاکستان کے یوم آزادی کا ایک بہت بڑا پروگرام پاکستانی کمیونٹی‘ سارسل میونسپلٹی اور سفارتخانہ پاکستان پیرس کے تعاون سے سارسل میں کیا جائے گا اور ان پروگراموں سے پاکستانی اور فرنچ کمیونٹی میں تعلقات کو فروغ حاصل ہو گا۔ پاکستان اور فرانس دوستی میں مددگار ثابت ہو گا۔