پاک وطن ہماری پہچان ہے

بہت دکھ کی بات ہے کہ آج ہم اپنے محسنوں کو بھول گئے ہیں، آج اقبال کا خواب پورا تو ہو چکا ہے لیکن کہنے کی حد تک۔ آج پاکستان حاصل کرنے کا مطلب پورا ہو چکا ہے لیکن مقصد نہیں۔ آج پاکستان صرف پاکستان ہے، اسلامی جمہوریہ پاکستان صرف کہنے کی حد تک۔ یہ پاک سرزمین جس کی مٹی آج صرف اس لئے زرخیز ہے کیوں کہ اس میں ان شہیدوں کا لہوشامل ہے جنہوں نے اپنا سب کچھ چھوڑ کر صرف ہمارے لئے اپنی زندگیاں  قربان کی تھیں اپنے آپ کو پاک کر دیا اپنے لہو سے اس سرزمین کو پاک بنا دیا۔ ان مائوں کا درد شامل ہے جنہوں نے آزادی حاصل کرنے کے لئے اپنے بچوں ،بہن بھائیوں کی قربانیاں دیں اور ان پر آنسو بہانے کی بجائے خُدا کا شکرادا کیا۔ یہ  سب کچھ  آنے والی نسلوں کوآزادی کی فضاؤں میں سانس لینے کیلئے کیا گیا، ان سے کسی چیز کے بارے میں پوچھا جاتا تو وہ سر اٹھا کر جواب دیتے کیونکہ وہ شہیدکو فخر سمجھتے تھے، کسی کے شہید ہونے  سے ان کے حوصلے بلندیوں کو چھونے لگتے، ان کے دل و دماغ جوش اور جذبے سے بھرے  تھے ، ہمارے قائد نے  ہمارے لئے کیا کچھ نہیں کیا، سوچنے کی بات یہ ہے کہ ہم نے اس پاک سرزمین کوکیا دیا۔ روزانہ  اتنے لوگ مررہے ہیں اب یہ تو یہ معمول کا حصہ بن چکا ہے ،لیکن افسوس اس بات کا ہے کہ یہ خون کسی اورپر قرض نہیں ہے، ان کی جان کی قیمت لگانے والا کوئی اور نہیں ہم خود ہیں۔ ایک مسلمان ہی دوسرے مسلمان کا دشمن ہے۔ اس ملک میں کسی کی جان محفوظ نہیں، تو کیا بدلا ہے ہم میں، کیا وہی کئی سال پرانی قوم بن چکے ہیں جسے جگانے کی ضرورت پڑے گی۔ اس ملک میں علم کی کوئی قدر نہیں کرتا، لوگ پرانے رسموں رواجوں اور رویوں پر قائم ہیں، لڑکیوں کی تعلیم کے خلاف ہیں کچھ لوگ جہالت میں اتنے آگے جاتے ہیں کہ لڑکیوں سے اب بھی نفرت کرتے ہیں اسی لئے انہیں پڑھائی سے روکتے ہیں۔ اقبال نے جو ایک خواب دیکھا تھا اس کی تعمیر وہ نہ دیکھ سکے لیکن انہیں یقین تھا کہ ہمارے پیارے قائد کر دکھائیں گے۔ قائد کی بہن محترمہ فاطمہ جناح  نے اپنے بھائی کا ساتھ نہ چھوڑا اور آخری دم تک ان کا ساتھ دیا، اپنی ہمت اور حوصلے سے بڑھ کر کام کیا۔ اگر اس زمانے میں لوگوں کو علم اورآزادی کی قدر نہ ہوتی تو یہ نا ممکن تھا۔ آج ہم علم کی شمع بننے کی بجائے جہالت کے اندھیروں میں ڈوب رہے ہیں۔کوئی اور ہماری زندگیوں کو نہیں بدل سکتا، سوائے قائد اعظم کی تعلیمات اور ان کے سنہری اقوال کے۔  ہم مسلمان ہیں اور پاکستانی ہیں۔ ہمارے بزرگوں  نے بہت سی قربانیاں دیں۔
 ہمیں پاکستان کا حق ادا کرنا ہے ہم نے ان شہیدوں کے خون کا حق ادا کرنا ہے جنہوں نے ہمارے لئے قربانیاں دیں، ہمیں قربانی دینی ہے، ایماندار ہونے کی۔ اللہ تعالی فرماتا ہے بے شک شیطان انسان کا کھلا دشمن ہے، ہم سب کو اس سے بچنا چاہئے اور اپنے قائد اور بڑوں کی طرح سر اٹھا کر چلنا چاہئے، اللہ تعالیٰ اس پاک دھرتی پر کبھی کوئی آنچ نہ آنے دے اور ہمیں علم کی قدر سکھا دے آمین۔ پاکستان زندہ باد
عائشہ صدیقہ کلاس ہشتم