بصارت سے محروم افراد حکومتی توجہ کے منتظر

بصارت سے محروم افراد حکومتی توجہ کے منتظر

محمد ریاض اختر
پندرہ اکتوبر یوم تحفظ سفید چھڑی‘ بصارت سے محروم افراد کا عالمی دن پاکستان سمیت دنیا بھر میں اس عہدکی تجدید کے ساتھ منایا گیا کہ حکومت اور سول سوسائٹی مل کر خصوصی افراد کو معاشرے کا کارآمد شہری بنانے میں شبانہ روز مصروف رہے گی وطن عزیز میں 10 لاکھ کے قریب نابینا افراد موجود ہیں بصارت سے محروم افراد علم و ادب کے موتیوں کے ساتھ پاکستان کی تعمیر و ترقی اور خوشحالی میں بھرپور حصہ لے رہے ہیں وفاقی و صوبائی حکومتیں ان کے مسائل پر خصوصی توجہ اور خصوصی اہمیت دیں تو درس و تدریس سے وابستہ شخصیات مسائل و مشکلات کا رونا نہ روئیںایوان وقت کی ایک نشست وفاقی دارالحکومت کے پڑوسی شہر راولپنڈی کی ممتاز درسگاہوں سے منسلک علم دوست شخصیات نے ان مسائل پر روشنی ڈالی جو انہیں پریشانی و بے کلی کا مسافر بنائے ہوئے ہے۔ پرنسپل گورنمنٹ بلائنڈ سکول برائے طالبات شمس آباد بیگم وسیم ثناءاﷲ و سینئر معلم گورنمنٹ قندیل سیکنڈری سکول برائے نابینا طلبہ کوہاٹی بازار پرویز اختر کی قیادت میں اساتذہ کرام کا کہنا تھا کہ حکومت پنجاب سپیشل الا¶نس اور بنیادی تنخواہ کو دوگنا کرنے کی طرف توجہ دے تو ہمارے نصف سے زائد مسائل ختم ہو سکتے ہیں نشست میں غلام فاروق‘ مسز رضیہ سلطانہ‘ مسز اسماءاقبال‘ مسز حمیرا‘ مسز رضوانہ خادم‘ مسز شاہدہ تنویر‘ مسز نائلہ محمود‘ مسزارشد پروین‘ مسز فردوس کوثر‘ مسز مظلوم اختر‘ مسز یاسمین بخاری اور انسٹرکٹرز فزیکل ایجوکیشن لطیف ڈینیئل اور مسز شاہدہ عمران نے بھی حصہ لیا۔ بیگم وسیم ثناءاﷲ نے بتایا کہ امریکہ میں پہلی بار 1964ءمیں وائٹ کین ڈے (یوم تحفظ سفید چھڑی) بنایا گیا اس کے بعد سے دنیا بھر میں یہ دن بصارت سے محروم سے اظہار یکجہتی کے لئے منایا جاتا ہے وطن عزیز میں نابینا افراد کی تعداد دس سے بارہ لاکھ ہے خوش آئند بات ہے کہ یہاں نابینا بچوں کو تعلیمی سہولتیں دستیاب ہیں جس کے باعث طلباءو طالبات بڑھ چڑھ کر عملی طور پر پاکستان کی خدمت کر رہے ہیں۔ 1984ءسے قبل طلباءو طالبات کی تعلیم کا بوجھ گورنمنٹ قندیل سکول کوہاٹی بازار پر تھا تین دہائی قبل شمس آباد میں طالبات کے لئے علیحدہ درسگاہ قائم کی گئی ۔مقام شکر ہے کہ راولپنڈی شہر میں بصارت سے محروم طلباءو طالبات کی تعلیم مسئلہ نہیں ہے حکومت کی طرف سے بچوں کو ماہانہ 800 سے وظیفہ کی فراہمی کے ساتھ یونیفارم‘ رہائش‘ خوراک دستیاب ہے دونوں درسگاہوں میں تقریباً 200 طلباءو طالبات تعلیم و تربیت کے مراحل طے کر رہے ہیں ہماری خواہش ہے کہ پندرہ اکتوبر کے دن کو صرف نابینا برادری سیلیبریٹ نہ کرے بلکہ معاشرے کے دیگر شعبہ ہائے زندگی بھی اظہار یکجہتی کے لئے میدان عمل میں موجود ہوں الحمدﷲ شعوری مہم کے مثبت اثرات کے پیش نظر اس بار عوامی حلقوں کی اچھی خاصی تعداد ہمارے شانہ بشانہ رہی۔ اسلام آبادمیں پاکستان بیت المال کے زیر اہتمام خصوصی پروگرام کی کامیابی نے ہمارے حوصلے بلند کردئے ہماری درخواست ہے کہ حکومت تنخواہ اور یگر الا¶نس کے مسائل پر فوری توجہ دے تو بڑے مسائل ختم ہونے میں مدد مل سکتی ہے سینئر معلم پرویز اختر نے بتایا کہ نصاب مکمل کروانا ہمارے لئے ہر سال درد سر بنا رہتا ہے پنجاب ٹیکسٹ بورڈ کی مرتب کردہ بریل بک جسے تعلیمی سیشن کے آغاز کے فوری بعد مل جانا چاہئے ان کی ترسیل ستمبر اکتوبر تک جارہی رہتی ہے۔ حمیرہ اصغر نے بتایا کہ کتابوں کی عدم دستابی سے اساتذہ کرام جن مسائل سے گزرتے ہیں ان کا اظہار الفاظ میں مشکل ہی نہیں ناممکن بھی ہے‘ غلام فاروق نے کہا کہ معاشرے میں بصارت سے محروم افراد کو آج بھی عجیب نظروں سے دیکھا جاتا ہے آخر کب تک ہم سپیشل افراد کو دوسرے درجے کا شہری سمجھتے رہیں گے۔ خادم اعلیٰ میاں شہباز شریف نے 2010ءمیں ہم سے بنیادی تنخواہ کو ڈبل کرنے کا وعدہ کیا تھا آج بھی ہم اس وعدے کے ایفاءہونے کے منتظر ہیں۔ حکومت کی اولین ذمہ داری ہے کہ وہ ان افراد کے لئے خصوصی مواقع فراہم کرے۔ پبلک مقامات پر خصوصی مراعات دی جائیں ہسپتال‘ ائرپورٹ‘ ڈے پارکس میں خصوصی انتظامات کی اشد ضرورت ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب کے صاحبزادے حمزہ شہباز شریف نے بھی مسائل حل کرانے کی یقین دہانی کرائی تھی۔ ہمارا کنوینس الا¶نس 2500 روپے ہے۔ کیا اتنی رقم میں راولپنڈی میں کرائے کا مکان مل سکتا ہے۔ 30 سال سے گزارہ الا¶نس کو اپ گریڈ نہیں کیا گیا۔ لطیف ڈینیئل اور مسز شاہدہ عمران نے بتایا کہ راولپنڈی ڈویژن کے بلائنڈ سکولوں میں گرا¶نڈ کی سہولت میسر نہیں۔ اس کے باوجود ہمارے طلباءو طالبات مثالی کارکردگی سے شہر اور اہل شہر کی نیک نامی میں اضافہ کر رہے ہیں۔ تنزل سکول کے طالب علم مبشر نے جاپان سپورٹس فیسٹیول میں پاکستان کی نمائندگی کا اعزاز پایا۔ گورنمنٹ بلائنڈ سکول کی طالبہ مہوش نے ملائشیا میں سبز ہلالی پرچم کو بلند کیا۔ اس درسگاہ کی تین طلبہ وزیراعلیٰ پنجاب سے لاکھوں کے کیش انعامات‘ لیپ ٹاپ اور دیگر گفٹ وصول کر چکی ہیں۔