شیخ الحدیث حافظ محمد عالم نقشبندی

ایس ۔اے حکیم القادری
الحمدللہ! سرزمین سیالکوٹ نہائت زرخیز اور مردم خیز ہے۔ جہاں علم و معرفت کے روشن ماہتاب ملا عبدالحکیم سیالکوٹی‘ ملا کمال الدین کشمیر‘ محدث کوٹلوی‘ علامہ محمد شریف‘ مولانا محمد ضیاءاللہ قادری‘ حضرت علامہ ڈاکٹر محمد اقبال اور حضرت شیخ الحدیث و التفسیر علامہ حافظ محمد عالم نقشبندی ؒ بڑے نمایاں نظر آتے ہیں۔پیر طریقت‘ واقفیت رموز حقیقت‘ شیخ الحدیث و التفسیر حضرت علامہ حافظ محمد عالم صاحب نقشبندی محدث سیالکوٹی یہاں 1927ءتا1999 تقریبا 72سال تک حصول علم کے بعد تدریس علم میںمصروف رہے۔ پہلے آپ نے لاہور میں حفظ قرآن‘ قرات‘ درس نظامی ‘ منطق‘ فلسفہ‘ علم کلام‘ علوم اصول وغیرہ علوم کے حصول میں مہ و سال صرف کئے اور پھر سیالکوٹ شہر اقبال اور اس کے مضافات کے مکینوں کے سینوں کو علم سے پر نور کرنے پر شب و روز صرف کردیئے۔ آپ کو راہی فردوس بریں ہوئے 18برس بیت گئے مگر ہنوز ایسا محسوس ہوتا ہے جیسے اب بھی قلب شہر میں واقع عظیم الشان درسگاہ دارالعلوم جامہ حنفیہ دودروازہ سیالکوٹ میں بیٹھے مختلف علوم کی کتب کے اسباق تشنگان علم کو پڑھا رہے ہیں یا کسی مدرسہ کا افتتاح کر رہے ہیں یا کہیں درس دے رہے ہیں یا کسی جلسہ عام میں خطاب سے فرغت پا کر اپنے طلبہ کو اکٹھا کر کے ان کی اخلاقی‘ روحانی‘ مسلکی و مذہبی تربیت فرمارہے ہیں۔
ملک میں اٹھنے والی ساری تحریکوں میںسرزمین سیالکوٹ کی آپ جان سمجھے جاتے تھے۔ تحریک ختم نبوت‘ تحریک نظام مصطفی ایسی تحریکیں ہیں جن کے آپ نے قیادت فرمائی ۔ قید و بند کی صعوبتیں برداشت کیں‘ زخم کھائے ۔حضرت علامہ حافظ محمد عالم محدث سیالکوٹی چاہتے تھے کہ ایسی ایک درسگاہ کا قیام عمل میں لایا جائے جہاں علوم قدیم یعنی فقہ فلسفہ‘ قرآن و حدیث‘ اصول و فروع ایسے علوم جدید یعنی نت نئی ایجادات‘ حوادثات‘ اختراعات کے دور میں ایسے علوم کی تدریس بھی کروائی جائے جس سے فیض یافتگان ایک ہی وقت میں دین مصطفی کی صحیح ترجمانی کرسکیں اور عصری ضروریات کے پورا کرنے کے لیے کمپیوٹر‘ کامرس‘ شہریت اور تاریخ کے مضامین کی تدریس کروائی جائے۔ آپ کے وصال فرمانے کے بعد ڈو ایکڑ زمین ڈسکہ اور پسرور روڈ کے سنگم پر دوبرجی ملہیاں میں چند سال قبل خرید لی گئی ہے جہاں آپ کے جانشین صاحبزادہ محمد حامد رضا مدظلہ‘ نے اس مقام مذکور پر عدیم المثال درسگاہ بنام جامعہ العالم کی تعمیر کا سلسلہ شروع کیاہوا ہے۔
مرکز شہر میں آپ کی قائم کردہ قدیم درسگاہ دارالعلوم جامعہ حنفیہ دودروازہ سیالکوٹ میں آپ کا سالانہ عرس مبارک 14اکتوبر2017ءبروز ہفتہ منعقد ہو رہا ہے پہلی نشست بعد از نماز عصر تا مغرب ختم شریف دعا ہوگی دوسری نشست بعد نماز عشاءہو گی جس میںپیر طریقت‘ رہبر شریعت‘ سلطان المناظرین‘ مقرر لاثانی‘ حافظ احادیث کثیرہ حضرت علامہ مولانا قاری الحاج الشاہ مفتی صغیر احمد رضوی صاحب جوکھنپوری بانی و متہہم الجامعہ القادرئی رچھا (انڈیا)‘ فضیلہ الشیخ ڈاکٹر عمروردانی صاحب ڈائریکٹر دارالافتاءالجامعة الازہر مصر‘ خطیب عرب و عجم حضرت علامہ مولانا مفتی خورشید عالم رضوی اور دینی اکابرین خطاب فرمائیں گے ۔