نماز برائی سے روکے رکھتی ہے

اعجاز احمد ڈنگہ

نبی اکرمؐ کا ارشاد ہے۔ اللہ تعالیٰ نے میری امت پر سب چیزوں سے پہلے نماز فرض کی اور قیامت میں سب سے پہلے نماز کا حساب ہو گا۔ نماز کے بارے میں اللہ سے ڈرو، نماز کے بارے میں اللہ سے ڈرو، نماز کے بارے میں اللہ سے ڈرو۔ آدمی کے اور مشرک کے درمیان نماز ہی حائل ہے۔ اسلام کی علامت نماز ہے ۔جو شخص دل کو فارغ کر کے اور اوقات اور مستحبات کی رعایت رکھ کر نماز پڑھے وہ مومن ہے۔ حق تعالیٰ شانہ نے کوئی چیز ایمان اور نماز سے افضل فرض نہیں کی۔ اگر اس سے افضل کسی اور چیز کو فرض کرتے تو فرشتوں کو اس کا حکم فرماتے، فرشتے دن رات کوئی رکوع میں ہے کوئی سجدے میں۔ نماز دین کا ستون ہے۔ نماز شیطان کا منہ کالا کرتی ہے۔ نماز مومن کا نور ہے۔ نماز افضل جہاد ہے۔ جب آدمی نماز میں داخل ہوتا ہے تو اللہ میاں اس کی طرف پوری توجہ فرماتے ہیں اور جب وہ نماز سے ہٹ جاتا ہے تو وہ بھی توجہ ہٹا لیتے ہیں۔ جب کوئی آفت آسمان سے اترتی ہے تو مسجد کے آباد کرنے والوں سے ہٹ جاتی ہے۔ اگر آدمی کسی وجہ سے جہنم میں جاتا ہے تو جہنم کی آگ سجدے والی جگہ کو نہیں کھاتی۔ اللہ نے سجدہ کی جگہ کو آگ پر حرام فرما دیا ہے۔ سب سے زیادہ پسندیدہ عمل اللہ کے نزدیک وہ نماز ہے جو وقت پر پڑھی جائے۔ اللہ تعالیٰ کو آدمی کی ساری حالتوں میں سب سے زیادہ پسند یہ ہے کہ اس کو سجدہ میں پڑا ہوا دیکھیں کہ پیشانی زمین سے رگڑ رہا ہے۔ اللہ کو آدمی سے سب سے زیادہ قرب سجدہ میں ہوتا ہے۔ جنت کی کنجیاں نماز ہیں۔ جب آدمی نماز کے لئے کھڑا ہوتا ہے تو جنت کے دروازے کھل جاتے ہیں اور اللہ کے اور اس نمازی کے درمیان پردے ہٹ جاتے ہیں، جب تک کہ اسے کھانسی وغیرہ نہ ہو۔ نمازی شہنشاہ کا دروازہ کھٹکھٹاتا ہے اور یہ قاعدہ ہے کہ دروازہ کھٹکھٹایا جاتا رہے تو کھل ہی جاتا ہے۔ نمازی کا مرتبہ دین میں ایسے ہی ہے جیسا سرکار درجہ بدن میں۔ نماز دل کا نور ہے۔ جو شخص وضو کر کے 2 یا 4 رکعت نماز پڑھ کر اللہ سے اپنے گناہوں کی معافی مانگتے تو اللہ معاف فرما دیتے ہیں۔ زمین کے جس حصہ پر نماز پڑھی جائے وہ حصہ زمین کے دوسرے ٹکڑوں پر فخر کرتا ہے۔ جو شخص نماز پڑھ کر دعا مانگتا ہے اللہ میاں وہ دعا قبول فرماتے ہیں خواہ فوراً یا کچھ دیر بعد۔ جو شخص تنہائی میں نماز پڑھے تو اس کو جہنم سے بری ہونے کا پروانہ مل جاتا ہے۔ جو شخص ایک نماز پڑھے اللہ کے ہاں اس کی ایک دعا مقبول ہو جاتی ہے جو شخص اچھی طرح نماز ادا کرے جنت اس کے لئے واجب اور دوزخ حرام ہو جاتا ہے۔ مسلمان جب تک پانچوں نمازوں کی پابندی کرتا ہے شیطان اس سے ڈرتا رہتا ہے اور نماز اسے برائی سے روکے رکھتی ہے۔ جب وہ نمازوں میں کوتاہی کرتا ہے تو شیطان اسے بہکانے لگتا ہے۔ سب سے افضل عمل اول وقت نماز پڑھنا ہے نماز ہر متقی کی قربانی ہے اللہ کے نزدیک سب سے پسندیدہ عمل اول وقت نماز پڑھنا ہے۔ صبح کو جو نماز کی طرف جاتا ہے اس کے ہاتھ میں ایمان کا جھنڈا ہوتا ہے ۔ ظہر کی نماز سے پہلے4 رکعتوں کا ثواب ایسا ہے جیسے تہجد کی نمازکی 4 رکعتوں کا ظہر سے پہلے 4 رکعتیں تہجد کی 4 رکعتوں کے برابر شمار ہوتی ہیں۔ جب آدمی نماز کے لئے کھڑا ہوتا ہے تو رحمت الہیہ اس کی طرف متوجہ ہوتی ہے۔ افضل ترین نماز آدھی رات کی ہے لیکن اس کو پڑھنے والے کم ہیں مومن کی شرافت تہجد کی نماز میں ہے۔ آخر رات کی 2 رکعتیں تمام دنیا سے افضل ہیں۔ تہجد ضرور پڑھا کرو تہجد صالحین کا طریقہ ہے۔ اللہ فرماتا ہے اے ابن آدم تو دن کے آغاز میں 4 رکعتوں سے عاجز نہ بن میں تمام دن تیرے کاموں کی کفایت کروں گا۔