آرمی چیف جنرل راحیل شریف کا دورہ میران شاہ

آرمی چیف جنرل راحیل شریف کا دورہ میران شاہ

شمالی وزیرستان ایجنسی میںدہشت گردی کے خلاف پاک فوج کاآپریشن ضرب عضب جاری ہے جس میںٹینکوں،بکتربندگاڑیوںاوربھاری توپ خانہ سے لیس فوجی دستوںکوگن شپ ہیلی کاپٹروںاورپاک فضائیہ کے بمبارطیاروںکی فضائی سپورٹ حاصل ہے اعلی عسکری کمانڈروںکے مطابق آپریشن کامیابی سے جاری ہے جس میںفوجی دستے مسلسل پیشقدمی کررہے ہیںاس ضمن میںپاک فوج کے سپہ سالارجنرل راحیل شریف میدان جنگ میںبرسرپیکارافسروںاورجوانوںکے حوصلے بڑھانے کیلئے شمالی وزیرستان خصوصااس کے صدرمقام میران شاہ کادورہ کرچکے ہیںجہاںکورکمانڈرپشاورلیفٹیننٹ جنرل خالدربانی نے ان کاخیرمقدم کیااورانہیںآپریشن کی تفصیلات سے آگاہ کیااعلی عسکری حکام کے مطابق شمالی وزیرستان میںپاک فوج کومزاحمت کابھی سامنارہاجس کانہایت سرعت سے صفایاکیاگیااوران حکام نے بتایاہے کہ شمالی وزیرستان کے اہم قصبوںمیران شاہ اورمیرعلی میںہاتھ آنے والے موادخصوصادیسی ساخت کے بموںکی تیاری کے مراکزمیںدھماکہ خیزموادسے بھری سینکڑوںٹینکیاں،دھماکہ خیزمواداوردیگرسازوسامان سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ شمالی وزیرستان میںدہشت گردی کامسئلہ پہلے سے لگائے جانے والے اندازوںکے مقابلہ میںکہیںزیادہ شدیداورسنگین نوعیت کاتھااس کے ساتھ ساتھ سرکاری اندازوںکے مطابق شمالی وزیرستان میںموجودغیرملکیوںکی تعدادڈیڑھ سے دوہزاربتائی جارہی تھی تاہم اب جب ان علاقوںمیںمختلف مشتبہ کمپائونڈزکی تلاشی لی جارہی ہے تویہ بات سامنے آئی ہے کہ وہاںعرب،ازبک،تاجک،چینی اوردیگرزبانوںمیںتحریرلٹریچریامواداوران غیرملکیوںکے زیراستعمال دیگرسامان کی موجودگی سے ظاہرہوتاہے کہ وہاںغیرملکیوںکی تعداداس سے کہیںزیادہ تھی ان حکام کے مطابق آپریشن ضرب عضب میںمارے جانے والوںکی تعدادپانچ سوسے زیادہ ہے جن میںزیادہ ترغیرملکی تھے ان عسکری حکام کے مطابق اس امرکاپوراپوراانتظام کیاگیاہے کہ مطلوب ملکی وغیرملکی فرارنہ ہونے پائیںاوراس آپریشن کے دوران جوکوئی بھی مزاحمت کررہاہے اس کے خلاف بلاامتیازکاروائی کی جارہی ہے آپریشن سے ہٹ کرشمالی وزیرستان سے قبائل کی نقل مکانی کاسلسلہ بھی تاحال جاری ہے اورفاٹاڈیزاسٹرمینجمنٹ اتھارٹی کے اعدادوشمارکے مطابق اب تک نقل مکانی کرنے والوںکی مجموعی تعداد8لاکھ33ہزار272سے تجاوزکرچکی ہے جن میں3لاکھ61ہزار459بچے اور2لاکھ23ہزار182خواتین شامل ہیںشدیدگرمی اورناموافق حالات میںنقل مکانی کرنے والے ان بے سروسامان قبائل کی امدادی سرگرمیوںکے سلسلہ میںتحریک انصاف کے سربراہ عمران خان،وزیراعلی پرویزخٹک،وفاقی وزیرسیفران لیفٹیننٹ جنرل(ر)عبدالقادربلوچ بنوںکے دورہ کرچکے ہیںتاہم صوبہ خیبرپختونخواکے گورنرسردارمہتاب احمدخان اس سلسلہ میںزیادہ سرگرمی سے ان آئی ڈی پیزکی دلجوئی میںمصروف ہیںاس ضمن میںانہوںنے وزیراعظم پاکستان محمدنوازشریف کی جانب سے آئی ڈی پیزکیلئے رمضان پیکج کی رقوم کی بذریعہ موبائل فون کمپنی ادائیگی کے پروگرام کاآغازکردیاہے فقیرایپی کے سجادہ نشین مولاناشیرمحمد،ملک نصراللہ خان اورمولوی گل رمضان کی سربراہی میںشمالی وزیرستان کے سرکردہ عمائدین اورقبائلی سرداروںکے گرینڈجرگہ کے ساتھ خصوصی نشست میںاس امرکادوٹوک اندازمیںاظہارکیاکہ شمالی وزیرستان ایجنسی میںجاری آپریشن ضرب عضب کامقصددہشت گردی اوردہشت گردوںکاصفایاہے اس ضمن میںٹارگٹیڈکاروائی کرکے اس بات کویقینی بنایاجارہاہے کہ کوئی شہری نقصانات نہ ہوںانہوںنے کہاکہ شمالی وزیرستان ایجنسی کے قبائل نے پاکستان کی سالمیت اوراستحکام کیلئے گھربارچھوڑنے کی قربانی دی ہے جسے پوری قوم قدرکی نگاہ سے دیکھتی ہے اورمشکل کی اس گھڑی میںنہ صرف وفاقی وصوبائی حکومتیںبلکہ پوری قوم اپنے آئی ڈی پیزبہن بھائیوںکے ساتھ ہے اس موقع پرجرگہ نے شمالی وزیرستان سے دہشت گردی کے خاتمہ میںپاک فوج اورحکومت کے ساتھ بھرپورتعاون کے عزم کااظہارکیاجرگہ نے امدادی رقوم ،غذائی اجناس اورصحت کی سہولیات سے متعلق شکایات سے بھی گورنرکوآگاہ کیاجس پرگورنرسردارمہتاب احمدخان نے فوری احکامات جاری کئے اورقبائل کے اس گرینڈجرگہ کویقین دلایاکہ وفاقی حکومت اورخیبرپختونخواکی صوبائی حکومت کی طرح پنجاب حکومت نے بھی اپنے شمالی وزیرستان کے بے گھربہن بھائیوںکی امدادکیلئے ایک پیکج دینے کاارادہ کیاہے جس کااجراء وزیراعلی پنجاب میاںشہبازشریف اپنے دورہ چین سے واپسی پرکریںگے اوریہ اس بات کاثبوت ہے کہ پوری قوم اپنے قبائلی بہن بھائیوںکے ساتھ ہے۔